Tuesday, September 28, 2021  | 20 Safar, 1443

پنجاب میں ٹرانس جینڈرز کیلئے اسکول کھولنے کا اعلان

SAMAA | - Posted: Jul 7, 2021 | Last Updated: 3 months ago
SAMAA |
Posted: Jul 7, 2021 | Last Updated: 3 months ago

فائل فوٹو

وزیر تعلیم پنجاب مراد راس نے صوبے بھر میں ٹرانس جینڈرز کیلئے اسکولز کھولنے کا اعلان کردیا۔

مائیکرو بلاگنگ سائٹ پر وزیر تعلیم پنجاب مراد راس کا کہنا تھا کہ ہم ملتان سمیت مخلتف شہروں میں ٹرانسجینڈرز کیلئے اسکول کھولنے جا رہے ہیں۔ ملتان کے بعد ہر ضلع میں یہ اسکول کھولے جائیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ ٹرانسجینڈرز کے مختلف گروپس سے ملاقات بھی کی ہے اور انہیں اس بات پر قائل کیا ہے کہ انہیں اسکولوں میں لایا جائے۔ یہ پراجیکٹ احساس تحفظ کے نام سے شروع کیا جائے گا۔

اس سلسلے میں جنوبی پنجاب ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کی جانب سے ٹرانس کمیونٹی کو تعلیم کی فراہمی کیلئے پاکستان کے سب سے پہلے پائلٹ پراجیکٹ پر کام شروع کر دیا گیا ہے، جہاں خواجہ سرا بغیر کسی خوف و خطر کے تعلیم حاصل کر سکیں گے۔ فوکل پرسن خواجہ سرا بلالی کا کہنا ہے کہ پنجاب حکومت کا یہ احسن اقدام ہے۔ پہلے جب خواجہ سرا اسکول جاتے تھے تو لوگ طرح طرح کی باتیں کرتے تھے، اب علیحدہ اسکول ملے گا تو پرسکون طریقے سے تعلیم حاصل کر سکیں گے۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ پائلٹ پراجیکٹ کے تحت شام کے اوقات میں خواجہ سرا تعلیم حاصل کر سکیں گے۔ احساس تحفظ کیلئے تدریسی فرائض پر ٹرانس جینڈر کمیونٹی کے تعلیم یافتہ افراد کو مامور کیا جائے گا۔

سی ای او ایجوکیشن شمشیر خان کا کہنا ہے کہ ملتان میں پہلی بار ٹراس جنڈر کیلئے تعلیم کے اقدامات کیے جا رہے ہیں۔ تیس سے زائد ایسے خواجہ سرا ہیں جو تعلیم حاصل کرنا چاہتے ہیں۔

پنجاب حکومت کے اعلان کے بعد خواجہ سراؤں کا کہنا ہے کہ معاشرے میں رہنے کیلئے مفت تعلیم کا ملنا کسی نعمت سے کم نہیں۔ پراجیکٹ کے تحت ٹرانس جینڈر کو پہلے مرحلے پر تعلیم اور دوسرے مرحلے پر روزگار فراہم کیا جائے گا۔

ملتان کے بعد اس پراجیکٹ کے تحت لاہور اور راول پنڈی میں بھی اسکولز کھولے جائیں گے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube