Monday, September 27, 2021  | 19 Safar, 1443

بلدیاتی اداروں سے متعلق کیس کا تفصیلی فیصلہ جاری

SAMAA | - Posted: Jul 5, 2021 | Last Updated: 3 months ago
Posted: Jul 5, 2021 | Last Updated: 3 months ago

سپریم کورٹ نے پنجاب کے بلدیاتی اداروں کو ختم کرنے کے لوکل گورنمنٹ ایکٹ 2019ء کے سیکشن 3 کو کالعدم قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ پنجاب کے بلدیاتی اداروں کو فوری بحال کرتے ہوئے مدت پوری کرنے دی جائے۔

سپریم کورٹ آف پاکستان نے پنجاب کے بلدیاتی اداروں کی بحالی کا تفصیلی فیصلہ جاری کردیا۔ جس میں کہا گیا ہے کہ صوبائی حکومت کی خواہش پر بلدیاتی ادارے تحلیل نہیں ہوسکتے۔

پنجاب کے بلدیاتی اداروں سے متعلق کیس کا 18 صفحات پر مشتمل فیصلہ چیف جسٹس گلزار احمد نے تحریر کیا ہے۔

عدالت نے اپنے فیصلے میں کہا کہ پنجاب کے بلدیاتی اداروں کو فوری بحال کرتے ہوئے مدت پوری کرنے دی جائے، عوام کو ان کے منتخب نمائندوں سے دور نہیں رکھا جاسکتا۔

سپریم کورٹ کا کہنا ہے کہ آرٹیکل 144 کے تحت قانون بنایا جاسکتا ہے لیکن اداروں کو ختم نہیں کیا جاسکتا۔

اسد علی خان نامی شہری نے بلدیاتی اداروں کی بحالی کیلئے عدالت عظمیٰ میں درخواست دائر کی تھی، سپریم کورٹ نے 25 مارچ کو کیس کا مختصر فیصلہ سنایا تھا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube