Wednesday, September 22, 2021  | 14 Safar, 1443

حکومت سندھ کا تجاوزات سے بےگھرافراد کوگھردینےکااعلان

SAMAA | - Posted: Jul 2, 2021 | Last Updated: 3 months ago
SAMAA |
Posted: Jul 2, 2021 | Last Updated: 3 months ago

نسلاٹاورکيلئےسال1950ميں زمين دی گئی تھی

وزیراعلیٰ سندھ کا کہنا ہے کہ تجاوزات کے دوران بے گھر ہونے والے افراد کو صوبائی حکومت گھر دے گی۔ نالہ متاثرين کو 80 گز کے پلاٹ ديئے جائيں گے۔ مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ سپریم کورٹ سے اپيل کريں گے کہ بحريہ کا فنڈز سندھ حکومت کو ديا جائے۔

کراچی میں 2 جولائی بروز جمعہ کو پریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ جو سرمايہ کاری کراچی آنی چاہيے تھی وہ نہيں آئی۔ صوبائی حکومت کے پاس وسائل نہيں ہيں۔ کراچی ميں پورے پاکستان سے لوگ آتے ہيں۔ معاشی ضرورت پوری کرنے لوگ يہاں آتے ہيں۔ پارليمنٹ کو فيصلے کرنے چاہئيں کہ تجاوزات سے بڑی تعداد میں لوگ بے گھر ہو رہے ہیں۔ سندھ حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ تجاوزات سے بے گھر ہونے والے افراد کیلئے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کریں گے۔

وزیراعلیٰ نے کہا کہ بے گھر افراد کو گھر دینے کیلئے کمیشن بنانے کی تجویز دیں گے۔ سپريم کورٹ اور ہائی کورٹ کے ريٹٓائرڈ ججز کميشن کا حصہ ہوں گے۔ پورا يقين ہے کہ سپريم کورٹ عوامی مسائل پر ہمارا ساتھ دے گا۔ ديکھا جائے گا کہ عدالتی احکامات کے روشنی ميں کيا حل نکالا جا سکتا ہے۔ اگر نسلہ ٹاور کے رہائشيوں کو پيسے مل جائيں تو وہ پريشان نہيں ہوں گے۔

مراد علی شاہ نے یہ بھی کہا کہ کمیشن سے مستقبل کیلئے بھی تجاویز لیں گے۔ عدالت نے حکم دیا ہے کہ مالکان متاثرین کو رقم ادا کرے۔ کمیشن بتائے گا کہ کس سرکاری افسر نے اختیارات سے تجاوز کیا۔ گریڈ 21 کے آفیسر کی نگرانی میں کمیشن بنائیں گے۔

نسلہ ٹاور

متنازعہ نسلہ ٹاور سے متعلق بات کرتے ہوئے مراد علی شاہ نے دعویٰ کرتے ہوئے کہا کہ نسلا ٹاور کيلئے سال 1950 ميں زمين دی گئی تھی۔ جس دور ميں نسلا ٹاور کی منظوری دی گئی تھی، اس وقت پيپلز پارٹی کی حکومت نہيں تھی۔ کہا جا رہا ہے کہ نسلا ٹاور کے معاملے پر سندھ حکومت کيا کر رہی ہے۔ یہ بات لوگوں کو معلوم ہونی چاہئے کہ نسلا ٹاور کے معاملے پر انکوائری کميشن بنا رہے ہيں۔

انہوں نے کہا کہ انکوائری کمیشن دیکھا گا کہ ليز اور سب ليز کے معاملے ميں کوئی غير قانونی کام ہوا ہے يا نہيں۔ اگر کوئی غير قانونی کام ہوا ہے تو ذمہ داروں کا تعين کيا جائے گا۔ کسی بھی سرکاری افسران نے غيرقانونی تعميرات کی اجازت دی ہوگی تو کارروائی ہوگی۔ نسلہ ٹاور میں لوگوں نے اپنی ساری زندگی کی کمائی لگا دی ہے۔

تجاوزات متاثرین کیلئے گھر

ایک سوال کے جواب میں وزیراعلیٰ سندھ نے بتایا کہ سپريم کورٹ ميں 3 درخواستيں دائر کر رہے ہيں۔ گجر اور اورنگی نالے کے متاثرين کے گھر بنانے کيلئے پيسہ چاہيے۔ عدالت سے اپيل کريں گے کہ بحريہ کا فنڈز سندھ حکومت کو ديا جائے۔ سپريم کورٹ چاہے تو فنڈز کی نگرانی کرا سکتا ہے۔ سپريم کورٹ ميں جمع بحريہ کا فنڈز سندھ کے لوگوں کا ہے۔

مراد علی شاہ کے مطابق نالہ متاثرين کو 80 گز کے پلاٹ ديئے جائيں گے۔ لوگوں کو ايل ڈی اے اسکيم 42 تيسر ٹاؤن ميں پلاٹ ديئے جائيں گے، جس کیلئے سندھ حکومت نے کابينہ سے منظوری لے لی ہے۔ پيپلز پارٹی کے منشور ميں ہے کہ لوگوں کو گھر دينا ہے۔ بلاول بھٹو نے تجاوزات آپريشن متاثرين کو متبادل دينے کی ہدايت کی ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube