Friday, September 24, 2021  | 16 Safar, 1443

قیدیوں کاتبادلہ،پاکستان اورسعودی عرب کا معاہدہ آخری مراحل میں ہے

SAMAA | - Posted: Jun 23, 2021 | Last Updated: 3 months ago
SAMAA |
Posted: Jun 23, 2021 | Last Updated: 3 months ago

فائل فوٹو

پاکستان اور سعودی عرب کا قیدیوں کے تبادلے کا معاہدے آخری مراحل میں ہے جبکہ سری لنکا سے بھی قیدیوں کے تبادلے کا معاہدہ ہوگا۔

بدھ کو اسلام آباد میں سینیٹر منظور احمد کی زیر صدارت قائمہ کمیٹی وزارت سمندر پار پاکستانیوں کا اجلاس ہوا جس میں سیکرٹری وزارت سمندر پار پاکستانیوں نے کارکردگی پر بریفنگ دی۔

انھوں نے بتایا کہ دنیا بھرمیں 78لاکھ پاکستانی موجود ہیں اور ان میں زیادہ ترمزدور پیشہ طبقہ ہے۔رواں سال سمندر پار پاکستانیوں نے 28 ارب ڈالر بھیجے ہیں۔

بریفنگ میں بتایا گیا کہ دنیا بھر میں 15 ہزار پاکستانی جیلوں میں ہیں جب کہ 7 ہزار سے زائد قیدی خلیجی ممالک میں موجود ہیں۔ خلیجی ممالک کے قوانین غیرملکی قیدیوں کے لیے مختلف ہیں۔ خلیجی ممالک میں کچھ ممالک کو قیدی واپس بھیج دئیے جاتے ہیں۔ چیئرمین کمیٹی کا کہنا تھا کہ پاکستان کے قیدیوں کے مسائل زیادہ ہیں جبکہ یورپ  اور امریکہ میں قیدیوں سے برابر کا سلوک کیا جاتا ہے۔ سعودی عرب میں بعض قیدی دیت کیسز میں گرفتار ہیں اور ان کی دیت اتنی ہے کہ ہم ادا نہیں کرسکتے۔

ایم ڈی اوورسیز پاکستانیز نے بتایا کہ سعودی عرب کے ساتھ قیدیوں کے تبادلے کا معاہدہ آخری مراحل میں ہے جبکہ سری لنکا کے ساتھ بھی قیدیوں کے تبادلے کا معاہدہ ہوگا۔ سعودی عرب میں60 فیصد قیدی منشیات کے الزام میں گرفتار ہیں جبکہ خلیجی ممالک میں زیادہ تر منشیات کیس میں گرفتار افراد کے شکایت کندہ پاکستانی ہیں۔

 سیکرٹری وزارت اوورسیز پاکستانیز نے واضح کیا کہ منشیات میں گرفتار افراد کے کیس کی پیروی نہیں کی جاتی ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube