Saturday, October 16, 2021  | 9 Rabiulawal, 1443

کوئٹہ میں ایرانی نصاب پڑھانے پر 6 اسکول سیل

SAMAA | - Posted: Jun 12, 2021 | Last Updated: 4 months ago
SAMAA |
Posted: Jun 12, 2021 | Last Updated: 4 months ago

کوئٹہ کے مختلف علاقوں میں ایرانی نصاب پڑھانے پر 6 اسکولوں کو سیل کردیا گیا ہے۔

اسسٹنٹ کمشنر سٹی محمد ذوہیب الحق کے مطابق اسکول غیر قانونی طور پر چلائے جا رہے تھے، جنہیں سیل کردیا گیا ہے۔ اسکولوں میں ایرانی نصاب پڑھایا جارہا تھا۔ اسکولز کرانی روڈ اور ہزارہ ٹاؤن میں قائم تھے۔

محمد ذوہیب الحق کا مزید کہنا تھا کہ تعلیمی اداروں کے سربراہان اور اساتذہ غیر ملکی ہیں۔ اسکولوں سے ناقابل قبول لٹریچر بھی برآمد ہوا۔ بند کئے گئے اسکول کئی سال سے اجازت کے بغیر چل رہے تھے۔

کوئٹہ میں اجازت کے بغیر چلنے والے اسکولوں کی تعداد 10 ہے جن میں سے 6 کو سیل کیا گیا، جب کہ دیگر 4 سے متعلق تحقیقات جاری ہے۔ اسکولز غیر ملکی فنڈنگ سے چلائے جا رہے تھے۔

بلوچستان ایجوکیشن فاؤنڈیشن کے ڈائریکٹر مانیٹرنگ شبیر احمد نے بتایا کہ یہ اسکول 1991ء میں ایک ایم او یو کے تحت قائم ہوئے تھے مگر اس کے بعد انہوں نے کوئی رجسٹریشن کرائی اور نہ ہی ان کا کوئی انسپکشن کرایا جاتا تھا۔

محکمہ تعلیم بلوچستان کے مطابق صوبے میں 2015 ایکٹ کے قانون کے تحت نجی اسکولوں کی رجسٹریشن لازمی ہے۔ ممنوعہ لٹریچر کو قبضے میں لیکر تحقیقات شروع کردی گئی ہیں۔

انتظامیہ کا کہنا ہے کہ کسی پاکستانی بورڈ سے الحاق نہ ہونے کی وجہ سے طلبہ مزید تعلیم کیلئے ایران بھی جاتے تھے۔ ان سکولوں نے بھی رجسٹریشن کی درخواستیں دی تھیں مگر نصاب سمیت دیگر شرائط پوری نہ کرنے پر ان کی رجسٹریشن کی درخواست مسترد کی گئی تھی۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube