برطانیہ سفری ریڈ لسٹ میں ڈالنے پر نظر ثانی کرے،عمران

SAMAA | - Posted: Jun 7, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Jun 7, 2021 | Last Updated: 2 months ago

فائل فوٹو

وزیراعظم عمران خان نے اپنے برطانوی ہم منصب بورس جانسن سے ٹیلی فونک رابطہ کرکے انھیں پاکستان کو سفری ریڈ لسٹ میں ڈالنے کے معاملے پر بات کی اور انھیں اس فیصلے پر نظر ثانی کا کہا ہے۔

وزیراعظم ہاؤس سے جاری تفصیلات کے مطابق پاکستانی وزیراعظم اور برطانوی ہم منصب کے درمیان پیر 7 جون کو ٹیلی فون پر رابطہ ہوا۔

اس موقع پر وزیراعظم عمران خان نے کرونا وائرس سے مؤثر طور پر نمٹنے کیلئے بورس جانسن کی کوششوں کو سراہا، جب کہ اس عالمی وبا سے نبرد آزما ہونے کے حوالے سے پاکستانی کوششوں سے بھی آگاہ کیا۔ دونوں رہنماؤں نے مختلف امور پر بات چیت کی جبکہ دو طرفہ تعلقات، خطے کی صورت حال اور افغان امن عمل پر بھی تبادلہ خیال کیا۔

عمران خان نے ماحولیات کے عالمی دن کے موقع پر ویڈیو پیغام جاری کرنے پر بورس جانسن کا شکریہ ادا کیا۔ دونوں وزرائے اعظم نے شراکت داری مضبوط بنانے، تجارت اور سرمایہ کاری کے فروغ اور اعلیٰ سطح پر بات چیت جاری رکھنے پر بھی اتفاق کیا۔

وزیراعظم عمران خان نے افغانستان سے افواج کی واپسی کی اہمیت پر بھی بات چیت کرتے ہوئے افغان امن کی حمایت کے لیے پاکستانی کوششوں سے آگاہ کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ ایف اے ٹی ایف ممالک ایکشن پلان پر پاکستان کی جانب سے عملدرآمد کی کوششوں کو تسلیم کریں۔ دونوں رہنماؤں نے علاقائی، عالمی امن اور باہمی تعلقات مضبوط بنانے کے عزم کا بھی اعادہ کیا۔

وزیراعظم عمران خان یہ بھی کہا کہ پاکستان افغان امن اور مفاہمتی عمل کی حمایت جاری رکھے گا کیونکہ افغانستان کے مسئلے کا کوئی فوجی حل نہیں ہے، افغان مسئلہ صری سیاسی بات چیت سے ہی حل ہو سکتا ہے۔

واضح رہے کہ اس سے قبل وزیراعظم عمران خان سال 2019 میں تین روزہ دورے پر برطانیہ گئے تھے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube