Thursday, September 23, 2021  | 15 Safar, 1443

ڈینیل پرل قتل کیس: ملزمان کی شکایات پرسندھ حکومت کونوٹس

SAMAA | - Posted: Jun 2, 2021 | Last Updated: 4 months ago
Posted: Jun 2, 2021 | Last Updated: 4 months ago
Supreme Court of Pakistan

فوٹو: آن لائن

ڈینیل پرل قتل کیس میں سپریم کورٹ نے 3ملزمان کی شکایات پر سندھ حکومت کو نوٹس جاری کر دیا۔

بدھ 2جون کو ڈینیل پرل قتل کیس کے ملزمان کی نظربندی کیس کی سماعت ہوئی جس میں ملزمان کی رہائی کے خلاف وفاق کی اپیل پر فریقین کو نوٹسز بھی جاری کیے گئے۔

اس دوران وکیل ملزمان نے کہا کہ خالد، سلمان ثاقب اور عارف شیخ کو ریسٹ ہاؤس میں طبی اور دیگر سہولیات فراہم نہیں کی جا رہی ہیں جبکہ عمر شیخ کو فلیٹ میں نقل و حرکت کرنے نہیں دی جاتی۔ ملزم کو صرف بیٹے اور بیوی سے ملنے دیاجاتا ہے۔

وکیل پنجاب حکومت نے کہا کہ عمر شیخ کی اپارٹمنٹ میں نقل و حرکت پر کوئی پابندی نہیں۔ اٹارنی جنرل نے عمر شیخ سے ساس، چچا اور چچی کی ملاقات کرانے کی یقین دہانی کرا دی۔

ڈینیل پرل قتل کیس: عمرشیخ کولاہور منتقل کرنے کی اجازت

عدالت نے ملزمان کی شکایت پر سندھ حکومت جبکہ ملزمان کی رہائی کے خلاف وفاق کی اپیل پر فریقین کو نوٹسز جاری کرتے ہوئے سماعت غیر معینہ مدت کے لیے ملتوی کر دی۔

واضح رہے کہ 24 دسمبر 2020 کو سندھ ہائی کورٹ نے امریکی صحافی ڈئینیل پرل قتل کیس میں احمد عمر شیخ سمیت 4 ملزمان کی نظر بندی کا نوٹیفکیشن کالعدم قرار دیتے ہوئے ملزمان کو فوری طور پر جیل سے رہا کرنے کا حکم دیا تھا تاہم جیل حکام کی جانب سے ضروری قانونی چارہ جوئی نہ ہونے کے باعث رہائی ممکن نہ ہوسکی۔

امریکی اخبار ’وال اسٹریٹ جرنل‘ سے وابستہ صحافی ڈینئل پرل کو 2002 میں کراچی میں اغوا کرنے کے بعد قتل کر دیا گیا تھا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube