سندھ: 4ارب روپے مالیت کے سولرہوم سسٹم کی منظوری

SAMAA | - Posted: May 29, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: May 29, 2021 | Last Updated: 2 months ago

وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے صوبے کے 10 اضلاع میں 4 ارب روپے کی لاگت سے شروع ہونیوالے منصوبے سولر ہوم سسٹم کی منظوری دے دی۔

ورلڈ بینک کے تعاون سے  شروع کئے جانیوالے اس منصوبے کی منظوری ہفتہ کو وزیراعلیٰ کی زیرصدارت منعقد ہونیوالے محکمہ توانائی کے اجلاس کے دوران دی گئی۔

اجلاس میں وزیر توانائی امتیاز شیخ، چیف سیکریٹری ممتاز شاہ، چیئر پرسن پی اینڈ ڈی شیرین ناریجو، وزیراعلیٰ سندھ کے پرنسپل سیکریٹری ساجد جمال ابڑو، سیکریٹری خزانہ حسن نقوی، سیکریٹری صحت کاظم جتوئی، سیکریٹری توانائی طارق شاہ، پی ڈی سولر ہوم سسٹم شاہ زمان کھوڑو اور دیگر متعلقہ افسران نے شرکت کی۔

وزیراعلیٰ سندھ کو بریفنگ دیتے ہوئے وزیر توانائی امتیاز شیخ نے کہا کہ ورلڈ بینک کے تعاون سے 4 ارب روپے کا سولر ہوم سسٹم تیار کیا گیا ہے جس کے تحت صوبے کے 10 اضلاع میں 20 ہزار گھرانوں کو 50 فیصد سبسڈی کے ساتھ سولر ہوم سسٹم دیئے جائیں گے۔

امتیاز شیخ نے بتایا کہ سولر ہوم سسٹم حاصل کرنیوالے افراد  دکاندار کو 50 فیصد ادا کریں گے جبکہ باقی 50 فیصد رقم حکومت ادا کرے گی۔ انہوں نے مزید بتایا کہ ان 10 اضلاع میں بدین، گھوٹکی، جیکب آباد، کشمور، خیرپور، قمبر-شہدادکوٹ، سانگھڑ، تھرپارکر، سجاول اور عمرکوٹ شامل ہیں۔

وزیراعلیٰ سندھ کو بتایا گیا کہ مذکورہ منصوبے کے تحت پی وی سولر پلیٹس، بیٹری، تین ایل ای ڈی بلب، ڈی سی فین اور ایک موبائل چارجر پورٹ مہیا کئے جائیں گے۔ ان سولر ہوم سسٹم کے گھریلو یونٹ 60 فیصد ان گھرانوں جن کی سربراہ خواتین ہوں گی اور 40 فیصد وہ گھرانے جن کے سربراہ مرد ہونگے کو مہیا کیے جائیں گے۔

وزیراعلیٰ سندھ نے محکمہ توانائی کو ہدایت کی کہ وہ اس حوالے سے ایسے غریب افراد کو ترجیح دیں جو آف گرڈ والے علاقے میں رہ رہے ہیں یا ان لوگوں کو جو بجلی کا کنکشن حاصل کرنے کے متحمل نہیں ہیں۔ وزیراعلیٰ سندھ نے اس منصوبے کی منظوری دی اور وزیر توانائی کو ہدایت کی کہ وہ منصوبے کے آغاز کیلئے انتظامات کریں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube