اسسٹنٹ کمشنرپاکپتن کوتھپٹرمارنےکا الزام،رکن پنجاب اسمبلی رانا نوید گرفتار

SAMAA | - Posted: May 26, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: May 26, 2021 | Last Updated: 2 months ago

لاہور ہائیکورٹ نے اسسٹنٹ کمشنر پاکپتن کو تھپڑ مارنے کے الزام میں پاکستان مسلم لیگ نون کے رکن پنجاب اسمبلی رانا نوید کی عبوری ضمانت خارج کردی۔ پولیس نے رانا نوید کو عدالت کے احاطے سے گرفتار کرلیا ہے۔

رکن صوبائی اسمبلی رانا نوید کیخلاف اسسٹنٹ کمشنر خاور بشیر کو تھپٹر مارنے کا مقدمے درج ہے۔

سرکاری وکیل نے بتایا کہ 20 نومبر 2020 کو شادی کی تقریب کے موقع پر قوائد کی خلاف ورزی پر چھاپہ مارا گیا۔ اس دوران 50 ہزار روپے جرمانہ عائد کرنے پر رانا نوید کی جانب سے اسسٹنٹ کمشنر  کو اغوا کرنے کی کوشش کی گئی۔

رانا نوید کے وکیل نے عدالت کو موقف پیش کیا کہ ان کے موکل نے مارکی ٹھیکے پر دی ہوئی ہے اور اس جگہ پر اسسٹنٹ کمشنر پروگرام کرنا چاہتے تھے۔ اسسٹنٹ کمشنر کو جب یہ جگہ دینے سے انکار کیا تو انھوں نے جھوٹا مقدمہ دائر کردیا۔ انھوں نے مزید بتایا کہ اسسٹنٹ کمشنر اپنی رپورٹ میں بتائیں کہ شادی کی تقریب میں کون سی ڈبل ڈش پکائی گئی تھی۔

رانا نوید کے وکیل کا یہ بھی کہنا تھا کہ اسسٹنٹ کمشنر نے بیان دیا ہے کہ ان پر 5 سے 6 افراد نے تشدد بھی کیا ہے لیکن میڈیکل رپورٹ کہیں بھی موجود نہیں ہے۔

وزیراعلیٰ پنجاب نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے کہا تھا کہ سرکاری افسران کے خلاف تشدد کی کوئی کارروائی برداشت نہیں کی جائےگی اور قانون کی پاسداری کو یقینی بنایا جائے گا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube