سابق وزيرخوراک پنجاب سے چینی پرسبسڈی دینے سمیت دیگر سوالات

SAMAA | - Posted: May 7, 2021 | Last Updated: 1 month ago
Posted: May 7, 2021 | Last Updated: 1 month ago

وزیر اعلیٰ اور جہانگیر ترین کا کیا کردار تھا؟

سابق وزير خوراک پنجاب سميع اللہ چوہدری کی نيب پيشی اندرونی کہانی سامنے آگئی جس میں 2018 کے دوران چينی پر سبسڈی دینے سمیت دیگر سوالات کیے گئے۔

نیب نے سوال کیا کہ 2018 ميں چينی پر سبسڈی کيوں دی اور ايکسپورٹ کی کيا ضرورت تھی؟ وزيراعلیٰ اور جہانگير ترين کا کيا کردار تھا؟

سميع اللہ نے جواب دیا کہ چينی برآمد کا فيصلہ ای سی سی نے اور سبسڈی کا کابينہ نے کيا، کابينہ سے پہلے وزيراعلیٰ نے سبسڈی کی سمری بھيجنے کی منظوری دی۔

سابق وزير خوراک سمیع اللہ نے جواب دیا کہ مل مالکان نے کہا چينی پہلے ہی وافر ہے اِس ليے کاشتکار کا گنا نہيں لے رہے تھے اور مل مالکان نے معاہدہ کيا کہ ايکسپورٹ سے ملک ميں چينی مہنگی نہيں ہوگی۔ ميں نے وفاق کو خطوط لکھ کر 3ارب روپے کی سبسڈی کو ڈھائی ارب پر بريک لگوائی۔

سمیع اللہ نے جواب دیا کہ جہانگيرترين سے چيني پر سبسڈی کے حوالے سے کبھی بات نہيں ہوئی اور اکيلا وزير کيسے سبسڈی دے سکتا ہے، جو بھی ہوا حالات کا تقاضا تھا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube