Tuesday, September 28, 2021  | 20 Safar, 1443

کروناوائرس ایس اوپیز پرعملدرآمد، ملک بھرمیں فوج تعینات کرنیکا فیصلہ

SAMAA | - Posted: Apr 26, 2021 | Last Updated: 5 months ago
SAMAA |
Posted: Apr 26, 2021 | Last Updated: 5 months ago

کرونا ایس اوپیز پر عملدرآمد کےلیے انتظامیہ کےہمراہ ہیں

پاکستانی فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے ڈائریکٹر جنرل میجر جنرل بابر افتخار کا کہنا ہے کہ پاکستان کے 16شہروں میں جہاں کرونا کیسز کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے وہاں فوجی دستے پہنچ چکے ہیں جو ایس او پیز پر عملدرآمد کرانے کیلئے انتظامیہ کی مدد کریں گے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں کرونا کی تیسری لہر جاری ہے جس کے باعث ہیلتھ کیئر سیکٹر پر شدید دباؤ ہے، پاکستان کے 51 شہروں میں مثبت کیسز کی شرح 5فیصد سے زیادہ ہے، ملک بھر میں 570 افراد وینٹی لیٹرز پر ہیں۔

میجر جنرل بابر افتخار نے بتایا کہ صورتحال خراب ہوئی تو انڈسٹری کیلئےمختص آکسیجن اسپتالوں کودینی پڑے گی، سول انتظامیہ کی معاونت کیلئے افواج پاکستان تیار ہے۔ ملک کے تمام اضلاع میں فوج کے دستے پہنچ چکے ہیں جو انتظامیہ کی مدد کریں گے۔

مزید جانیے: پنجاب بھر کے تمام اسپتالوں میں الیکٹو سرجریز پرپابندی عائد 

بابر افتخار نے مزید کہا کہ حفاظتی اقدامات پر عمل کرکےوباء سے محفوظ رہ سکتے ہیں، آزمائش کی گھڑی میں پاک فوج عوام کی توقعات پر پورا اترے گی۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے پريس کانفرنس میں بتایا کہ ملک بھر ميں پاک فوج کي تعیناتی کا فیصلہ کیا گیا ہے، حکومت کي ہدايت کے تحت ابتدائی طور پر تعيناتياں کی گئی ہیں، کرونا کیسز میں اضافے والے 16 شہروں میں فوجی دستے انتظامیہ کی مدد کیلئے پہنچ چکے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: سندھ کےتمام اسکولز،کالجزاورجامعات غیر معینہ مدت تک بند رکھنے کا حکم

ميجر جنرل بابر افتخار کا کہنا تھا کہ کرونا کی تیسری لہر پہلے سے زيادہ خطرناک ہے، مثبت کيسز کی شرح خطرناک حد تک بڑھ چکی ہے، 16 شہروں ميں کيسز کي شرح بہت زيادہ ہے، آزمائش کی اس گھڑی میں پاک فوج عوام کی توقعات پر پورا اترے گی اور عوام کی حفاظت کو یقینی بنائے گی۔

ترجمان پاک فوج نے واضح کیا کہ پاک فوج کرونا وائرس سے بچاؤ کیلئے تفویض کردہ ذمہ داریوں کا کسی قسم کا سیکیورٹی معاوضہ نہیں لے گی۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube