سندھ کےتمام اسکولز،کالجزاورجامعات غیر معینہ مدت تک بند رکھنے کا فیصلہ

SAMAA | - Posted: Apr 26, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Apr 26, 2021 | Last Updated: 2 months ago

فائل فوٹو

مرتضی وہاب کا کہنا ہے کہ کرونا کے بڑھتے کیسز کے تناظر میں سندھ کے تمام اسکولوں، کالجز اور جامعات بند رہیں گے۔

مائیکرو بلاگنگ سائٹ پر ترجمان سندھ حکومت مرتضیٰ وہاب نے صوبے بھر میں بڑھتے کرونا وائرس کی شرح پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے صوبائی حکومت کی جانب سے مزید سخت ایس او پیز کا اعلان کردیا۔

نئے فیصلے کے مطابق صوبے کے تمام تعلیمی ادارے بشمول اسکولز، کالجز اور جامعات بند رہیں گی۔

شادی اور دیگر اجتماعات اور تقریبات پر بھی پابندی عائد رہے گی۔

۔29 اپریل سے سندھ بھر میں انٹر سٹی پبلک ٹرانسپورٹ بھی بند رہے گی۔

سرکاری دفاتر میں ملازمین کی حاضری 80 فیصد کم کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ جس پر عمل کل 27 اپریل سے ہوگا۔

صرف 20 فیصد ملازمین روٹیشن پالیسی کے تحت دفاتر میں ڈیوٹی دیں گے۔

سیکریٹریز اپنے ضروری اسٹاف کو بلائیں گے۔

اسٹاف گھروں سے کام کرینگے۔

سرکاری ملازمین کو ہر وقت فون پر موجود رہنا ہے۔

کسی بھی سرکاری ملازم کو صوبے سے باہر جانے کی اجازت نہیں ہوگی۔

 نجی دفاترمیں  50فیصد حاضری کی پابندی نہیں ہو رہی، ہم اس کو مانیٹر کریں گے۔

کرونا ایس او پیز پر عمل نہ کرنے والے دفاتر کو سیل کردیا جائے گا۔

مساجد میں جاتے ہوئے بھی ایس او پیز کا خصوصی خیال رکھا جائے

ایس او پیز کے تحت مساجد کھلی رہیں گی۔

حکومت سے گزارش ہے کہ انٹرنیشنل فلائٹس بند کرے۔ ہمارے ملک پر کئی ممالک میں انٹری بند کردی گئی ہے۔

ریسٹورنٹس میں ڈائنگ اندر اور باہر بند رہے گی۔

ٹیک اوے اور ڈلیوری کھلی رہے گی۔

شاپنگ سینٹرز شام 6 بجے تک ہی کھلے رہیں گے۔

اگر کیسز مزید بڑے تو بازار مکمل طور پر بند کر دیئے جائیں گے۔

کسی دکان میں بغیر ماسک کسی کو اندر آنے کی اجازت نہ دی جائے۔

جس دکان میں ایس او پیز پر عمل نہیں ہوگا، وہ دکان سیل کردی جائے گی۔

اسپتال ان تمام پابندیوں سے مستثنیٰ ہیں۔

جیلز میں ملاقاتوں پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔

گڈز ٹرانسپورٹ اور انڈسٹریز کھلی رہیں گی، لیکن ایس او پیز کی پیروی کی جائے۔

جمعرات 29 اپریل سے انٹر سٹی ٹرانسپورٹ بند کردی جائے گی۔

بعد ازاں پریس کانفرنس سے خطاب میں وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ انتظار نہیں کرسکتے کہ سب بیڈز بھر جائیں پھر سختیاں شروع کریں۔ پہلے بھی کہا تھا کہ وفاق نے قدم نہ اٹھايا تو ہم اٹھا ئينگے۔ سندھ میں47افراد وینٹی لیٹر پر ہیں۔ ہم نے این سی او سی میں انٹر سٹی ٹرانسپورٹ بند کرنے کی تجویز دی تھی

صوبے میں صحت عامہ سے متعلق گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سندھ میں مثبت کیسز کی شرح دوسرے صوبوں سے کم ہے۔ سندھ میں اب تک 2 لاکھ کرونا کیس رپورٹ ہوئے ہیں۔ سندھ میں کرونا کے 35 لاکھ ٹیسٹ کر چکے ہیں۔ سندھ میں کرونا سے تقریبا 4600 اموات ہوچکی ہیں۔ کل سندھ میں مزید 6 لوگ کرونا سےانتقال کرگئے ہیں۔

آکسیجن کی طلب

صوبے کیلئے مطلوبہ مقدار میں آکسیجن کی فراہم سے متعلق وزیر اعلیٰ نے بتایا کہ وفاق سے اسٹیل ملز کا آکسیجن پلانٹ کھولنے سے متعلق بات چیت کی ہے۔ تکنیکی ماہرین، انجینیرز آج اسٹیل ملز کے آکسیجن پلانٹ کا جائزہ لیں گے۔ اس کے بعد ہی اندازہ ہو سکے گا کہ پلانٹ سے آکسیجن کس حد تک ممکن ہے۔
حکام کے مطابق پاکستان اسٹیل ملز کا آکسیجن پلانٹ پندرہ ہزار دوسو کیوبک میٹرفی گھنٹہ پیداوار کی صلاحیت رکھتا ہے۔

WhatsApp FaceBook

One Comment

  1. شمع عامر  April 30, 2021 6:34 am/ Reply

    میری حکومت سے گزارش ہے بچوں کو اس سال بغیر امتحان کے پاس نہ کیا جائے جس طرح آن لائن پڑھائی ہو رہی ہے اسی طرح پیپر بھی ہو سکتے ہیں۔ اگر ایسا نہ کیا گیا تو تعلیمی نظام میں بگاڑ کی صورت پیدا ہو سکتی ہےاور بچے بھی صرف سارا وقت موبائل میں ہی گزارتے ہیں وہ بھی تعلیم سے بہت دور ہوجائیں گے۔بچے تو معصوم ہوتے ہیں لیکن ہم بڑوں کو اپنی ذمہ داری نبھانی چائیے۔
    شکریہ

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube