Sunday, December 5, 2021  | 29 Rabiulakhir, 1443

ملکی حالات تلخ اور انتشار کا شکار ہیں، شاہد خاقان

SAMAA | - Posted: Apr 20, 2021 | Last Updated: 8 months ago
SAMAA |
Posted: Apr 20, 2021 | Last Updated: 8 months ago

حکومت جو وعدے کرتی ہے اس کوعوام کے سامنے لانا چائیے

پاکستان مسلم لیگ نون کے رہنما اور سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ حکومت جو وعدے کرتی ہے ان کو عوام کے سامنے لانا چائیے۔

منگل کی صبح ایل این جی ریفرنس کی سماعت کےموقع پر سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اسلام آباد کی احتساب عدالت میں پیش ہوئے۔انھوں نے عدالت کو بتایا کہ ان کے وکیل بیرسٹرظفراللہ  کرونا کا شکار ہوگئے ہیں اس لئے گزارش ہے کہ کسی نئے گواہ کا بیان آج نہ ریکارڈ کیا جائے۔ شاہد خاقان نے کہا کہ پہلے گواہ پر کسی اور ملزم کا وکیل جرح کرنا چاہے تو کرلے۔ عدالت نے شاہد خاقان کو حاضری لگا کر واپس جانے کی اجازت دے دی۔

عدالت کے باہر میڈیا سے بات کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ ملک میں احتساب کا یکطرفہ نظام چل رہا ہے اور حالات بہت تلخ اور انتشار کا شکار ہیں،ہر شخص پریشان ہے۔

وزیراعظم عمران خان کی تقریر پر انھوں نے کہا کہ کل وزیراعظم نے جو تقریر کی اس کی کسی کو سمجھ نہیں آئی کہ بات کیا کی گئی۔ ملک میں مہنگائی اور بے روزگاری بڑھتی جارہی ہے۔حالات خراب سے خراب تر ہورہے ہیں لیکن حکمرانوں کو پرواہ نہیں ہے۔وزیراعظم میں ہمت تھی تو پارلیمان میں تقریر کرتے لیکن انھوں نے پارلیمنٹ بند کرکے تقریرکی جس کا نہ سر تھا اور نہ پیر ہے۔

لاہور کے حالات پر ان کا کہنا تھا کہ رمضان شریف میں جو لاہور میں ہوا اس کے حقائق عوام کے سامنے نہیں آسکے ہیں۔احتجاج ناموس رسالت ﷺ پر تھا اور حکومت بات چیت کررہی تھی لیکن بات چیت میں کہا ہوا اس کا کسی کو پتہ نہیں۔ انھوں نے مزید کہا کہ حکومت کا جو ٹولہ پریس کانفرنس کرتا تھا وہ آج غائب ہے جبکہ  وزیراعظم نے شہریوں کی موت پر بات تک نہیں کی۔

شاہد خاقان نے کہا کہ جمہوریت میں جماعتوں کو کالعدم قرار دیا جاتا ہے اور پھر ان سے مذاکرات بھی ہوتے ہیں۔ ناموس رسالت ﷺ پر پوری اسلامی دنیا میں کوئی دو رائے نہیں پائی جاتی لیکن ہمارے ملک میں اس پر انتشار کیوں ہے۔ حکومت یہ بتائے کہ فرانسیسی سفیر کو نکالنے کا وعدہ کس نے کیا تھا۔

اپنےدور حکومت سے متعلق سابق وزیراعظم نے کہا کہ ہم نے اپنے دور میں تحریک لبیک کے احتجاج پر جو کہا وہ تاریخ کا حصہ ہے۔ ہم کہتے ہیں کہ ایک سچائی کا کمیشن بنا دیں اور اس سے سب پتہ چل جائے گا۔ خلائی مخلوق اب زمینی مخلوق بن چکی ہے اور فیض آباد میں جو ہوا اس کے حقائق بہت تلخ ہیں۔ تاہم اس کا واحد حل ایک کمیشن ہے جس میں حقائق سامنے آئیں۔

کابینہ میں تبدیلی پر لیگی رہنما نے کہا کہ وزیروں کو بدلنے سے کچھ نہیں ہو گا اور یہ موجودہ حکومت کا پانچواں وزیرخزانہ ہے۔ ہرشخص ہی آج وزیر خزانہ بنا ہوا ہے اوریہ سرکس ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube