نائن زیرو کیس کی کارروائی مکمل، فیصلے کی تاریخ کااعلان

SAMAA | - Posted: Apr 5, 2021 | Last Updated: 4 months ago
SAMAA |
Posted: Apr 5, 2021 | Last Updated: 4 months ago

کراچی کی انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے ایم کیو ایم کے سابق مرکز نائن زیرو آپریشن کیس کی کارروائی مکمل کرلی، فيصلہ 23 اپريل کو سنايا جائے گا۔

متحدہ قومی موومنٹ کے مرکز نائن زیرو عزیز آباد میں رینجرز نے 11 مارچ 2015ء کو چھاپہ مار کر عبید کے ٹو سمیت دیگر مبینہ ٹارگٹ کلرز کو گرفتار کیا، جو نائن زیرو کے اندر اور اطراف کے علاقوں میں موجود تھے، کارروائی میں بڑی تعداد میں اسلحہ بھی برآمد ہوا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: نائن زیرو سےگرفتارملزمان پرفردجرم عائد

انسداد دہشت گردی کی عدالت میں 6 سال کی کارروائی کے بعد ایم کیو ایم مرکز پر رینجرز کے چھاپے اور گرفتاریوں سے متعلق 26 مقدمات کا فیصلہ محفوظ کرلیا گیا جو 23 اپریل کو سنایا جائے گا۔

کیس کی کارروائی کے دوران کئی نشیب و فراز آئے، نومبر 2017ء میں عبید کے ٹو کو 14 سال کی سزا سنائی گئی تاہم انسداد دہشت گردی کی دوسری عدالت نے نومبر 2018ء میں انہیں عدم ثبوت پر بری کردیا تھا۔

ایم کیو ایم کے مرکز نائن زیرو سے گرفتار 26 ملزمان پر 9 مارچ 2016ء کو قتل، اقتدام قتل، اسلحہ اور دھماکا خیز مواد رکھنے سمیت 50 مقدمات میں فرد جرم عائد کی گئی، جن میں فیصل موٹا، عبیدکےٹو، نادرشاہ، نعمان، فرحان شبیر، عامر توتلا اور دیگر شامل ہیں۔

تفصیلات جانیں: نائن زیرو سے برآمد دھماکہ خیز مواد، اسلحہ کی فائل غائب

اکتوبر 2019ء میں تفتیشی افسر انسپکٹر چنگیز خان تین ماہ کی معطلی کے بعد انسداد دہشت گردی عدالت میں پیش ہوئے اور انکشاف کیا کہ چھاپے کے دوران ملنے والے اسلحہ اور دھماکہ خیز مواد کی فائل لاپتہ ہوگئی ہے، جس پر عدالت نے ان کی سخت سرزنش کرتے ہوئے پولیس افسر کو جیل بھیجنے کی دھمکی بھی دی تھی۔

مزید جانیے: نائن زیرو کے سکیورٹی انچارج نے انکشافات کردیئے

ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین کی جانب سے 22 اگست 2016ء کو اشتعال انگیز اور پاکستان مخالف تقریر کے بعد سے متحدہ قومی موومنٹ شدید دباؤ میں تھی اور ڈاکٹر فاروق ستار سمیت تقریباً تمام رہنماؤں نے بانی ایم کیو ایم سے لاتعلقی کا اظہار کردیا تھا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube