آئین میں مزیدترمیم کابل سینیٹ میں پیش،حکومت کی مخالفت

SAMAA | - Posted: Apr 5, 2021 | Last Updated: 4 months ago
SAMAA |
Posted: Apr 5, 2021 | Last Updated: 4 months ago

فائل فوٹو

پاکستان پیپلزپارٹی کے سینیر رہنما سینیٹر رضا ربانی نے آئین میں ترمیم کا بل 2021 سینیٹ میں پیش کردیا، تاہم حکومت کی جانب سے بل کی مخالفت کردی گئی۔

سینیٹ کا اجلاس بروز پیر 5 اپریل کو چیئرمین صادق سنجرانی کی صدارت میں شروع ہوا۔ اس موقع پر بل پیش کرتے ہوئے سینیٹر رضا ربانی کا کہنا تھا کہ بل کا مقصد دونوں ایوانوں کی پاور شیئرنگ ہے۔ وزیراعلیٰ کو سینیٹ میں بولنے کی اجازت ہونی چاہیئے۔

رضا ربانی کا کہنا تھا کہ قومی اسمبلی کے مقابلے میں سینیٹ کے اختیارات کم ہیں۔ سینیٹ اور قومی اسمبلی کے اختیارات برابر ہونے چاہئیں۔ سینیٹ کے اختیارات بڑھائے جائیں اس حوالےسے قراردادیں بھی ایوان نے منظور کیں۔ پہلی ترمیم آرٹیکل 57 میں تجویز کی گئی۔ ایک سے دوسرے صوبے میں ووٹ منتقلی کیلئے کم از کم پانچ سال سے رہائش ہو۔

بل پیش کرنے پر حکومتی اراکین کی جانب سے اس کی مخالفت کی گئی۔ وزیر پارلیمانی امور علی محمد خان نے بل کو ناقابل عمل قرار دیا۔

واضح رہے کہ بل میں سینیٹ کے اختیارات بڑھانے کی بات بھی کی گئی۔ چیئرمین سینیٹ نے آئینی ترمیمی بل 2021 متعلقہ کمیٹی کو بھجوا دیا۔

قبل ازیں سینیٹ اجلاس کے آغاز پر اپوزیشن اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) میں شامل اپوزیشن جماعتیں آپس میں الجھ پڑیں۔ اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کے سینیٹر اعظم نذیر تارڑ کا کہنا تھا کہ ہمیں الگ اپوزیشن بینچ الاٹ کیے جائیں اور سینیٹ الیکشن میں خفیہ کیمروں کی تحقیقات کروائی جائیں۔

اعظم نذیر تارڑ کا کہنا تھا کہ اپوزیشن لیڈر بنانے کیلئے 5 تحفے بھجوائے گئے، اعظم تارڑ کے ریمارکس پر گیلانی کی حمایت کرنے والے سینیٹرز نے احتجاج کیا۔ بی اے پی کے سینیٹرز کو تحفہ کہنے پر حکومتی اراکین نے بھی ہنگامہ کیا اور ایوان میں شور شرابا شروع ہوا۔

اعظم نذیر تارڑ کا کہنا تھا کہ 5 جماعتوں کے 27 سینیٹرز نے الگ اپوزیشن گروپ بنایا ہے، اپوزیشن مثبت اور تعمیری کردار ادا کرے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ اپوزیشن لیڈر کی تقرری پر ہمارے دل رنجیدہ ہیں، ہم 5 جماعتیں آزاد گروپ کی حیثیت سے اپوزیشن نشستوں پر بیٹھیں گی۔

دوسری جانب یوسف رضا گیلانی کی حمایت کرنے والے دلاور خان گروپ نے بھی سینیٹ میں الگ نشستیں مانگ لیں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube