Thursday, June 17, 2021  | 6 ZUL-QAADAH, 1442

سوکھے راوی کنارے نسلوں کو سیراب کرنے والی ندی

SAMAA | - Posted: Mar 19, 2021 | Last Updated: 3 months ago
Posted: Mar 19, 2021 | Last Updated: 3 months ago

غریب بچوں کو تعلیم دینے والا جھگی اسکول

راوی روڈ پر سوکھے دریا کے کنارے ایک ایسی ندی بہہ رہی ہے جو شاید فصلیں تو نہیں لیکن نسلیں ضرور آباد کرسکتی ہے۔

یہ ندی علم کی ہے جو ایک اسکول کی صورت ایک این جی او نے راوی کنارے قائم ہے جس میں آس پاس کی جھگیوں میں رہنے والے ایسے طلباء تعلیم کے زیور سے آراستہ کیے جا رہے ہیں جو اپنے معاشی مسائل کی وجہ سے تعلیمی اخراجات برداشت نہیں کرسکتے۔

جھگی نما بنے اس اسکول میں روزانہ سہ پہر تین سے پانچ بجے تک تعلیم و تربیت کا سلسلہ جاری رہتا ہے جہاں کئی غریب بچے اپنے شوق سے آتے ہیں جن کا مقصد معاشرے کے دیگر بچوں کی طرح مستقبل ميں کچھ بننا ہوتا ہے۔

بوسیدہ کپڑوں میں مبلوس، چپلوں سے محروم پیر اور کندھے پر بستہ لٹکائے 10 سالہ ارم نے بھی حال ہی میں اسی درسگاہ میں داخلہ حاصل کرلیا ہے۔

آنکھوں میں مستقبل کے سنہری خوابوں کی چمک لیے اس بچی کا کہنا ہے کہ وہ جب بچوں کو اسکول جاتے دیکھتی تو اپنی امی سے کہتی کہ اسے بھی پڑھنے جانا ہے لیکن امی ہمیشہ یہ کہہ کر چپ کرا دیتیں کہ یہ باتیں چھوڑو اور گھر کے کام کرو۔

ارم کا کہنا تھا کہ اب اس نے اسکول میں پڑھنا شروع کردیا ہے اور بڑی ہوکر وہ ڈاکٹر بنے گی۔ اجالا نامی اس اسکول میں ارم کے علاوہ کئی اور بچے ہیں جن کی اب کتابوں سے دوستی ہوچکی ہے۔

این جی او کی منتظم راشدہ نے سماء سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہمارا مقصد یہ ہے کہ یہ ان بچوں کی زندگیوں میں اجالا بھر دیں کسی طرح یہ بچے اپنے حقوق و فرائض سمجھیں اور معاشرے کے لیے کا رآمد ثابت ہوں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube