Tuesday, January 25, 2022  | 21 Jamadilakhir, 1443

انفوگرافک: سندھ کے اسکولوں میں دوماہ کے دوران 1600کرونا کیسزرپورٹ

SAMAA | and - Posted: Mar 16, 2021 | Last Updated: 11 months ago
Posted: Mar 16, 2021 | Last Updated: 11 months ago

رواں سال 18 جنوری سے 15 مارچ (تقریباً 2 ماہ) کے دوران سندھ کے اسکولوں میں کروان وائرس کے 1600 سے زائد کیسز رپورٹ ہوچکے ہیں۔

ڈائریکٹر جنرل ہیلتھ سندھ کی جانب سے منگل کو تعلیمی اداروں میں کرونا کیسز کی اضلاع کی بنیاد پر رپورٹ جاری کی گئی۔

رپورٹ کے مطابق کراچی تعلیمی اداروں میں کرونا کیسز میں سرفہرست ہے، جس کے بعد بالترتیب حیدرآبد، میرپور خاص اور ٹھٹھہ کا نمبر آتا ہے۔

اعداد و شمار کے مطابق اسکول، کالجز اور یونیورسٹیوں میں کرونا وائرس کے رپورٹ ہونیوالے کیسز کا روزانہ کی بنیاد پر تناسب 29.8 فیصد ہے۔ یہ نتیجہ 18 جنوری 2021ء کو تعلیمی ادارے کھلنے سے 15 مارچ تک جمع کئے گئے اعداد و شمار سے حاصل کیا گیا۔

ذیل میں چارٹ دیا جارہا ہے جس میں کراچی اور سندھ کے دیگر شہروں و اضلاع میں کیسز کی تفصیلات درج ہیں۔

کراچی کے تعلیمی اداروں میں رپورٹ کرونا وائرس کیسز (18جنوری تا 15 مارچ 2021ء)

سندھ بھر کے تعلیمی اداروں میں رپورٹ کرونا وائرس کے کیسز (18جنوری تا 15 مارچ 2021ء)

وزیر تعلیم سندھ سعید غنی کے ترجمان زبیر میمن نے سماء ڈیجیٹل سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ جب کسی اسکول میں کرونا کیسز رپورٹ ہوتے ہیں تو اسے 10 سے 15 دن کیلئے بند کردیا جاتا ہے، اس عرصے میں تمام عملے، اساتذہ اور طلبہ کو قرنطینہ کردیا گیا، جبکہ متاثرہ افراد سے قریبی رابطہ رکھنے والے افراد کا بھی کرونا ٹیسٹ کیا جارہا ہے۔

زبیر میمن نے مزید کہا کہ قرنطینہ کے بعد اسکول کو ڈس انفیکٹڈ (جراثیم سے پاک) کرکے طلبہ کو واپس بلایا جاتا ہے۔ سرکاری اسکول میں کرونا وائرس کیسز کی صورت میں کئے جانیوالے ٹیسٹ کی رقم حکومت کی جانب سے ادا کی جاتی ہے۔

سندھ بھر میں تعلیمی ادارے متبادل دنوں میں 50 فیصد طلبہ کے ساتھ کلاسز کا انعقاد کررہے ہیں۔ انہیں ہدایت کی گئی ہے کہ ہر وقت سماجی فاصلے پر عملدرآمد کو یقینی بنایا جائے۔

زبیر میمن کا کہنا ہے کہ احکامات کی خلاف ورزی کرنیوالے اسکولوں کو جرمانے کے ساتھ ساتھ 15 روز کیلئے سیل بھی کیا جارہا ہے، ایسے سرکاری اسکول کی انتظامیہ کو شوکاز نوٹس کا اجراء کیا جاتا ہے اور برطرف کیا جارہا ہے۔

گزشتہ چند ہفتوں کے دوران پاکستان میں کرونا وائرس کی تیسری لہر کے دوران کیسز میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے، اس تناظر میں وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے اسلام آباد، پنجاب اور خیبرپختونخوا کے تعلیمی ادارے 2 ہفتوں کیلئے بند کردیئے۔

دوسری جانب سندھ، بلوچستان اور گلگت بلتستان کو تعلیمی ادارے متبادل دنوں میں کھلے رکھنے کی اجازت دی گئی تاہم سعید غنی کا کہنا تھا کہ صوبے میں کرونا وائرس کے کیسز میں اضافے پر اسکول بند کئے جاسکتے ہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube