الیکشن کمیشن ملک کی ایجنسزسے خفیہ بریفنگ لے،عمران خان

SAMAA | - Posted: Mar 6, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Mar 6, 2021 | Last Updated: 2 months ago

ہمیں اور مضبوط ہونا ہے

وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ اگر یہ الیکشن آپ نے اچھا کرایا ہے تو پھر پتا نہیں کہ برا الیکشن کیسا ہوتا ہے۔ الیکشن کمیشن ملک کی ایجنسزسے خفیہ بریفنگ لے تاکہ پتا چلے کہ کتنا پیسہ چلا۔

قومی اسمبلی سے اعتماد کا ووٹ لینے کے بعد وزیراعظم عمران خان نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ میں نے کل شام کو جو حالات دیکھے تو مجھے احساس ہوا کہ آپ لوگوں کو دل سے تکلیف تھی کہ سینیٹ الیکشن ہارنے پر۔ اس وقت یہ ایک آزمائش ہے جس کا مقصد دیکھنا ہے کہ آپ اس سے کیسے نکلتے ہیں۔ پارٹی تب تگڑی ہوتی ہے جب اس پر آزمائش ہوتی ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ انشا اللہ وقت کے ساتھ ساتھ ہماری ٹیم مضبوط ہوتی جائے گی۔ اللہ ہمارے ایمان کو مضبوط کرنے کیلئے آزماتا ہے۔ ترقی کی منزل میں مشکلات آتی ہیں۔ میں اپنی پارٹی کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں کہ وہ اس مشکل وقت سے نکلے ہیں۔ کئی اراکین بڑی مشکل سے یہاں پہنچے ہیں اور کئی ایسے بھی ہیں جن کی طبیعیت بھی ٹھیک نہیں تھی۔

انہوں نے کہا کہ یہاں لوگوں کو خریدنے کیلئے منڈیاں لگی ہوئی ہیں اور الیکشن کمیشن کو لگا کہ ہم نے اس کی آزادی پر کچھ کہا ہے۔ جب قوم اپنے نظرے سے ہٹتی ہے تو پھر وہ مر جاتی ہے۔ الیکشن کمیشن کو اس بات پر فخر تھا کہ انہوں نے آزاد الیکشن کرایا۔ مجھے افسوس ہوتا ہے کہ ہم یہ باتیں سمجھ نہ سکیں۔ یہ جو قرضے چڑھے ہوئے ہیں، انہوں نے اخلاقی طور پر ہماری قوم کو تباہ کیا ہے۔

وزیراعظم پاکستان نے کہا کہ الیکشن کمیشن کہتا ہے اچھا الیکشن کمیشن کروایا یہ اچھا تھا تو برا کیا ہوتا ہے۔ فضل الرحمان 2 نمبر آدمی ہے۔ نواز شریف جھوٹ بول کر ملک سے بھاگا ہوا ہے۔ نواز شریف کی بیماری پر شیریں مزاری کے آنسو آگئے تھے۔

وزیراعظم نے یہ بھی کہا کہ آصف زرداری دنیا بھر میں کرپٹ ثابت ہو چکا ہے۔ دنیا میں اس پر فلمیں بنی ہوئی ہیں، اس کے بارے میں کہتے ہیں کہ ایک زرداری سب پر بھاری۔۔ دوسری طرف نواز شریف جو ملک لوٹ کر اور جھوٹ بول کر باہر بھاگا ہوا ہے۔ آج وہاں تقریریں کر رہا ہے اور سکیمیں بنا رہا ہے کہ اس کو اتنا پیسہ دو ادھر اتنا پیسہ چلاؤ۔

انہوں نے کہا یہ سب ڈاکو اکٹھا ہو کر دباؤ ڈالنے کی کوشش کر رہے ہیں کہ جس طرح پرویز مشرف نے ڈر کر این آر او دیا تھا۔ انھوں نے اتنا بڑا جرم کیا کہ اس این آر او کے بعد دونوں نے اقتدار میں آ کر دونوں ہاتھوں سے ملک لوٹا۔ ملک پر قرضوں کی تعداد میں بے تحاشا اضافہ ہوا۔‘

عمران خان نے کہا کہ وہ یوسف رضا گیلانی جس نے ملک سے باہر ملک کا 60 ملین ڈالر لانے کے لے خط لکھنے سے انکار کر دیا تھا۔ اور وہ اب وہ ایسے پھر رہا ہے جیسے نیلسن مینڈیلا ڈس کوالیفائی ہو گیا ہو۔ فیٹف کی قانون سازی کے دوران حــزب اختلاف نے نیب میں 34 ترامیم لے آئے تاکہ ان کی چوری کے کیسز ختم ہو جائیں۔ ان کا ایک نکاتی ایجنڈا ہے۔ ان کا صرف ایک خوف ہے کہ یہ این آر او نہیں دے گا، اب یہ فیٹف میں پھنس گیا ہے، اب اس سے این آر او لے لو۔ ان کو نہیں پتا تھا کہ ملک بلیک لسٹ میں چلا جائے گا۔ ان کا ایک شہزادہ اور شہزادی آ گئی۔ انھوں نے اخباروں میں تصاویر لگا کر مینار پاکستان جلسہ کیا تو لوگ نہیں نکلے۔ ان کے مطابق لاہور والے لوٹنے والوں کے لیے نہیں نکلتے۔

وزیراعظم پاکستان نے کہا کہ یہ نظام ہم اسی طرح لے کر آئیں گے جس طرح دنیا میں میں نیوٹرل امپائرز لے کر آیا ہوں۔ ان دونوں پارٹیوں نے چارٹر آف ڈیموکریسی میں کہہ دیا تھا کہ اوپن بیلٹنگ کرائیں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube