Monday, April 12, 2021  | 28 Shaaban, 1442

ووٹ نہ دینے والا پارٹی سے فارغ ہوگا، وزیراعظم کااعلان

SAMAA | - Posted: Mar 5, 2021 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Mar 5, 2021 | Last Updated: 1 month ago

فوٹو : آن لائن

وزیراعظم عمران خان نے اعلان کیا ہے کہ اعتماد کیلئے پولنگ میں ووٹ نہ لینے والا رکن پارٹی سے فارغ ہوگا، مجھ سے زیادہ زندگی میں ہار جیت کسی نے نہیں دیکھی، مشکل وقت میں ساتھ دینے پر اتحادیوں کا شکر گزار ہوں۔

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت اتحادی جماعتوں کی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس ہوا جس میں متحدہ قومی موومنٹ پاکستان، گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس، مسلم لیگ ق کے رہنماؤں، شیخ رشید احمد اور پی ٹٰ آئی کے اراکین اسمبلی نے شرکت کی۔

وزیراعظم عمران خان نے قومی اسمبلی سے اعتماد کا ووٹ لینے سے متعلق ارکان کو اعتماد میں لیا اور اپنا منشور و مقصد ارکان کے سامنے رکھا۔

وزیراعظم عمران خان نے ارکان پر واضح کردیا کہ جو ووٹ نہیں دے گا اسے پارٹی سے فارغ کردیا جائے گا، مشکل وقت میں ساتھ کھڑے رہنے پر اتحادیوں کا شکر گزار ہوں۔

الیکشن کمیشن کی جانب سے گزشتہ روز کی تقریر پر رد عمل کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ زندگی میں مجھ سے زیادہ ہارجیت کسی نے نہیں دیکھی، کوئی نہ کوئی مشکل آتی رہی، اللہ کی مدد سے سرخرو ہوکر نکلا، ہار یا جیت میں پاؤں زمین پر ہی رہنے چاہئیں، شکست پر استقامت آتی ہے، ہار اور جیت کے نشیب و فراز سمجھتا ہوں۔

یہ بھی پڑھیں: شکست تسلیم کرنیکا حوصلہ ہونا چاہیے،الیکشن کمیشن

وزیراعظم نے ایک بار پھر اپوزیشن کی جانب سے ارکان کو توڑنے کی کوشش کا خدشہ ظارہ کرتے ہوئے کہا کہ اگر اعتماد کا ووٹ نہ ملا تو اپوزیشن میں بیٹھ جائیں گے۔ ہلکے پھلکے انداز میں ان کا کہنا تھا کہ چھانگا مانگا نہیں لے جاسکتا، ہاں مری لے جاسکتا ہوں۔

وزیراعظم نے شرکاء سے کہا کہ جس رکن کو ان  پر اعتماد نہیں وہ کھل کر اظہار کرے، کوئی شخص بلیک میل کرکے اپنی بات نہیں منواسکتا، آپ کو عوام نے منتخب کرکے ایوان میں بھیجا ہے، آپ ضمیر کی آواز پر فیصلہ کریں، پیسے لے کر ووٹ دینا بد دیانتی ہے۔

پارليمانی پارٹی کے اجلاس ميں شریک ارکان اسمبلی کو خط بھی دیئے گئے، جس میں لکھا گيا ہے کہ جو ووٹ نہيں دے گا يا غير حاضر ہوگا، اس کی رکنيت ختم ہوجائے گی۔

اس سے قبل میڈیا سے گفتگو میں شیخ رشید احمد کا کہنا تھا کہ عمران خان کل دوبارہ نئی سیاسی زندگی کا آغاز کریں گے، جو عدم اعتماد لانے کا سوچ رہے تھے وہ مزید انتظار کریں، الیکشن کمیشن کے بجائے کل کے الیکشن پر توجہ ہونی چاہئے، اپوزیشن نے پوری کوشش کی عمران خان ناکام ہو۔

انہوں نے کہا کہ 16 سے زیادہ ارکان اِدھر اُدھر ہوئے لیکن آج سب اکھٹے تھے، بیلٹ پیپر پر ٹک کرنے کا کوئی مسئلہ نہیں تھا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube