Tuesday, June 22, 2021  | 11 ZUL-QAADAH, 1442

پاک بھارت کاسرحدسیزفائرمعاہدےپرمکمل عمل پراتفاق

SAMAA | and - Posted: Feb 25, 2021 | Last Updated: 4 months ago
SAMAA | and
Posted: Feb 25, 2021 | Last Updated: 4 months ago

فائل فوٹو

پاکستان اور بھارت کے درمیان ڈائریکٹر جنرل ملڑی آپریشنز کی سطح پر رابطے میں جنگ بندی معاہدوں پر عمل پیرا ہونے کا اعادہ کیا گیا ہے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ ( آئی ایس پی آر) کے مطابق ڈائریکٹر جنرل ملٹری آپریشن پاکستان میجر جنرل نعمان ذاکریا اور بھارتی ہم منصب لیفٹننٹ جنرل پرامجت سنگھ سنگھا کے درمیان ہاٹ لائن پر رابطے میں دونوں اطراف سے دیرپا اور باہمی تعاون سے سرحد پر سیز فائر معاہدے پر مکمل طور پر عمل کرنے کا اعادہ کیا گیا ہے۔ دونوں ممالک کی جانب سے ڈائریکٹر جنرل ملٹری آپریشن نے ہاٹ لائن پر رابطہ کیا۔

دونوں فوجی افسران نے ہاٹ لائن رابطے اور بارڈر فلیگ میٹنگز کے موجودہ نظام کے ذریعے کسی بھی غیر متوقع صورت حال اور غلط فہمی کو حل کرنے پر اتفاق کیا۔

سما سے خصوصی گفتگو میں ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار کا کہنا تھا کہ پاک بھارت ڈی جی ایم اوز کی بات چیت اچھے ماحول میں ہوئی، جس میں کنٹرول لائن سمیت تمام سیکٹرز کی صورت حال کا جائزہ لیا گیا۔ بات چیت میں ایل او سی اور دیگر تمام سیکٹرز کی صورت حال پر بھی غور کیا گیا۔

آئی ایس پی آر کے مطابق ڈی جی ایم اوز نے بنیادی معاملات اور خدشات حل کرنے پر اتفاق کیا، پاکستان اور بھارت متفق ہیں کہ ہاٹ لائن کے موجودہ مکینزم کو مؤثر بنایا جائے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار نے بتایا کہ پاکستان اور بھارت میں رابطہ 1987 ء سے جاری ہے، ایل او سی پرجنگ بندی کےلیے 2003 ء میں ایک اور انڈراسٹینڈنگ ہوئی، 2014 ء سے ایل او سی پر جنگ بندی کی خلاف ورزیوں میں تیزی آگئی تھی۔ سال 2003 ءکے بعد سے اب تک 13ہزار 500 سے زائد سیز فائرخلاف ورزیاں ہوئیں، جس میں 310 شہری جاں بحق 1600 کے قریب زخمی ہوئے۔

ترجمان کے مطابق سال 2014 ءسے 2021 ء کے درمیان 97 فیصد سیز فائرخلاف ورزیاں ہوئیں، جب کہ 2019 ء میں سب سے زیادہ سیز فائر خلا ف ورزیاں ہوئیں۔ سال 2018 ء میں سیز فائرخلاف ورزیوں سے سب سے زیادہ جانی نقصان ہوا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube