اسلام آباد میں لاپتہ افراد کے لواحقین کا دھرنا ختم

SAMAA | - Posted: Feb 20, 2021 | Last Updated: 3 months ago
SAMAA |
Posted: Feb 20, 2021 | Last Updated: 3 months ago

وزیر انسانی حقوق شیریں مزاری سے ملاقات کے بعد لاپتہ افراد کے لواحقین نے ڈی چوک پر پانچ روز سے جاری دھرنا ختم کر دیا۔ شیریں مزاری نے ان کو یقین دہانی کرائی کہ وزیراعظم عمران خان بلوچستان کے لاپتا افراد کے لواحقین سے ملاقات کریں گے۔

بلوچستان کے لاپتہ افراد کے لواحقین کا اسلام آباد میں پانچ روز جاری رہنے والا دھرنا ختم ہوگیا۔ وزیراعظم کی ہدایت پر وزیر انسانی حقوق شیریں مزاری دھرنے میں پہنچ گئیں اور پیغام پہنچایا کہ وزیراعظم لواحقین کی نمائندہ کمیٹی سے خود ملاقات کریں گے۔

شیریں مزاری نے لواحقین سے لاپتا افراد کی فہرست بھی مانگ لی جس کے بعد مظاہرین نے دھرنا ختم کرنے کا اعلان کردیا۔

چیئرمین وائس آف مسنگ پرسن نصر اللہ بلوچ کا کہنا ہے کہ وزیراعظم نے کہا ہے کہ 15 مارچ تک آپ لوگوں سے ملاقات ہوگی۔ آپ لوگ 3 بندوں کا نام دیں۔ ہم آپ لوگوں سے ملاقات کریں گے اور مارچ تک انشاء اللہ 13 فیملیز ہیں۔ ان کے حوالے سے ان کے خاندان کو بتایا جائے گا۔

اس یقین دہانی کے بعد لاپتا افراد کی ماؤں بہنوں اور بیٹیوں کی امید اور مایوسی میں ڈوبی نظریں وزیراعظم پر لگ گئی ہیں۔ فوکل پرسن برائے لاپتہ افراد سمی بلوچ کا کہنا ہے کہ ہم نے ان کو اپنا بڑا سمجھا تھا کہ وہ اس ملک کا وزیراعظم ہے، وہ ان ماوں کی درد کو تکلیف کو سمجھیں گے لیکن افسوس کے ساتھ وہ نہیں آئے۔ اب ہمیں نہیں پتہ وہ آگے بھی ہم سے ملاقات کریں گے یا نہیں۔

رقت آمیز مناظر کے ساتھ دھرنا تو ختم ہوگیا لیکن مظاہرین جاتے ہوئے یہ بھی واضح کر گئے کہ اگر موجودہ حکومت نے بھی پچھلی حکومتوں کی طرح غیرسنجیدگی دکھائی تو دوبارہ دھرنا دیں گے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube