تحریک انصاف میں بغاوت کے بعد عبدالقادر سے ٹکٹ واپس

SAMAA | - Posted: Feb 13, 2021 | Last Updated: 2 months ago
Posted: Feb 13, 2021 | Last Updated: 2 months ago

سینیٹ الیکشن کے ٹکٹ کی تقسیم پر بلوچستان میں تحریک انصاف کے اندر اختلافات پیدا ہو گئے۔ کمیٹی کی جانب سے نامزد امیدوار عبدا القادر کو ریجنل صدور نے پیرا شوٹر، نیب زدہ اور شہباز شریف کا بزنس پارٹنر قرار دیدیا جس پر عبدالقادر سے ٹکٹ واپس لے کر ظہور آغا کو جاری کرديا گیا۔

پاکستان تحریک انصاف نے سینیٹ الیکشن کے لئے بلوچستان سے عبدالقادر کو امید وار نامزد کر دیا تھا۔ اراکین صوبائی اسمبلی نصیب اللہ مری نے ان کا نام تجویز کیا جبکہ مبین خلجی عبدالقادر کے تائید کنندہ بنے تھے۔

نصیب اللہ مری کا کہنا ہے کہ سینیٹ کا ووٹ پارٹی کی امانت ہے۔ پارٹی نے جسے نامزد کیا اسے ہی ووٹ دیں گے ۔

عبدالقادر کا کہنا ہے کہ میرا تعلق، تعلیم، کاروبار بلوچستان سے ہے۔ میں دو ہزار اٹھارہ میں سینیٹ الیکشن میں حصہ لے چکا ہوں اور دھرنوں کے دوران لاجسٹک سپورٹ بھی فراہم کی ہے۔

عبدالقادر کو ٹکٹ دینے پر پی ٹی آئی بلوچستان کے پارلیمانی لیڈر سردار یار محمد رند ریجنل صدور کے ہمراہ ڈٹ گئے اوت عبدالقادر کو پیرا شوٹرقرار دیدیا۔ ریجینل صدر نواب خان دمڑ نے کہا کہ عبدالقادر کا پی ٹی آئی بلوچستان سے کوئی تعلق نہیں۔ یہ پیرا شوٹر، نیب زدہ اور شہباز شریف کا بزنس پارٹنر ہے۔

پی ٹی آئی بلوچستان کے ریجینل صدور کہتے ہیں کسی بھی نظریاتی ساتھی کو سینیٹ الیکشن کا ٹکٹ دیا جائے حمایت کریں گے۔

پارٹی رہنماؤں کی بغاوت کے بعد وزیراعظم کے معاون خصوصی شہباز گل نے ٹوئٹ کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان تحريک انصاف نے سینيٹ انتخابات کے ليے عبدالقادر سے ٹکٹ واپس لے کر ظہور آغا کو جاری کرديا ہے۔

شہباز گل نے کہا کہ عبدالقادر کو ٹکٹ دینے پر بلوچستان کی قيادت نے اعتراض کيا تھا اور کپتان ہمیشہ اپنے پارٹی ورکر کی آواز سنتا ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube