Thursday, June 17, 2021  | 6 ZUL-QAADAH, 1442

اسلام آبادہائیکورٹ حملہ،4وکلاجوڈیشل ریمانڈپرجیل منتقل

SAMAA | - Posted: Feb 11, 2021 | Last Updated: 4 months ago
SAMAA |
Posted: Feb 11, 2021 | Last Updated: 4 months ago

فائل فوٹو

اسلام آباد ہائی کورٹ پر پیر 8 فروری کو حملے اور احتجاج میں ملوث 4 وکلا کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل منتقل کرنے کا حکم دے دیا گیا ہے۔

اسلام آباد ہائی کورٹ پر حملے کے کیس کی سماعت اسلام آباد میں انسدا دہشت گردی کی عدالت میں ہوئی۔ اس موقع پر پولیس نے ایف آئی آر میں نامزد چار وکلاء کو انسداد دہشت گردی عدالت جج کے روبرو پیش کیا۔

وکلاء میں ظفر علی ورائچ، نوید ملک، شیخ شعیب اور نازیہ بی بی شامل ہیں۔ عدالت نے چاروں گرفتار وکلاء کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیجنے کا حکم دیتے ہوئے گرفتار وکلا کو دوبارہ 18 فروری کو پیش کرنے کی ہدایت کردی۔

اس موقع پر عدالت نے پولیس کو 7 روز کے اندر وکلاء کیخلاف چالان پیش کرنے کا بھی حکم دیا۔

واضح رہے کہ وکلاء نے تمام عدالتوں میں سماعت رکواتے ہوئے چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ جسٹس اطہر من اللہ کو یرغمال بنالیا تھا۔ وکلاء نے ہائی کورٹ کی عمارت کے شیشے، گملے، کھڑکیاں، ٹی وی، فرنیچر تک توڑ دیا۔ احتجاج اور توڑ پھوڑ کی فوٹیج بنانے پر صحافیوں کے موبائل فون بھی چھین لیے اور وڈیوز ڈیلیٹ کر دیں گئیں تھی۔

اس موقع پر مشتعل وکلا کی جانب سے جان سے مارنے کی دھمکیاں بھی دی گئیں۔ وکلا کی جانب سے ایف ایٹ کچری میں تجاوزات کی خلاف آپریشن پر احتجاج کیا گیا تھا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube