ملک بھرمیں مضرصحت پانی فروخت ہورہاہے، پاکستان کونسل آبی وسائل

SAMAA | - Posted: Feb 3, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Feb 3, 2021 | Last Updated: 2 months ago

سینیٹ کی قائمہ کمیٹی سائنس و ٹیکنالوجی میں انکشاف

پاکستان کونسل برائے تحقیق آبی وسائل نے سینیٹ قائمہ کمیٹی سائنس و ٹیکنالوجی میں انکشاف کیا ہے کہ کراچی اور لاہور سمیت ملک کے بڑے شہروں میں منرل واٹر کے نام پر مضر صحت پانی فروخت ہو رہا ہے۔ چیئرمین کمیٹی مشتاق احمد نے انسانی صحت سے کھیلنے والوں کیخلاف سخت کارروائی کا مطالبہ کردیا۔

سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے سائنس و ٹیکنالوجی کے اجلاس میں منرل واٹر کی اصلیت سامنے آگئی۔ بتایا گیا کہ صاف پانی کے نام پر پاکستان کے شہریوں سے بڑا فراڈ کیا جارہا ہے، کراچی کے گلی محلوں میں مضر صحت منرل واٹر بن رہا ہے، لاہور اور حیدرآباد میں بھی بعض کمپنیاں انسانی  صحت سے کھیل رہی ہیں۔

پاکستان کونسل برائے تحقیق آبی وسائل حکام نے بتایا کہ کمپنیوں کیخلاف کارروائی کریں تو وہ نئے نام سے گندا دھندا شروع کر دیتی ہیں، کئی لوگوں نے تو گھروں میں ہی واٹر پلانٹ لگا رکھے ہیں۔

کمیٹی ارکان نے صورتحال پر تشویش کا اظہار کردیا۔ صابر شاہ کا کہنا تھا کہ یہ بڑا خطرناک ایشو ہے، ہیپاٹاٹس بی اور سی سمیت دیگر بیماریوں کا صاف پانی سے گہرا تعلق ہے۔

چیئرمین کمیٹی مشتاق احمد نے پینے کے پانی کی جانچ پڑتال کرنیوالے اداروں کو بااختیار بنانے کا مطالبہ کردیا۔ انہوں نے کہا کہ جرمانہ لگانے، سیل کرنے، جیل میں ڈالنے کا ان کے پاس کوئی اختیار نہیں، اگر حکومت یہ کام کردے تو اسپتالوں کے اوپر بوجھ کم ہوگا اور صحت کے ایشوز بھی حل ہوجائیں گے۔

پی سی آر ڈبلیو آر حکام نے یہ بھی کہا کہ گزشتہ سال غیرمعیاری پانی بیچنے والے 18سیلنگ پوائنٹس اور 5 مینو فیکچرنگ کمپنیوں کو بند کیا گیا، کمیٹی نے یہ کارروائیاں ناکافی قرار دے دیں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube