Tuesday, June 22, 2021  | 11 ZUL-QAADAH, 1442

لاہور: کنسائنو ویکسین کاٹرائل کسی ری ایکشن کے بغیر مکمل

SAMAA | - Posted: Jan 23, 2021 | Last Updated: 5 months ago
SAMAA |
Posted: Jan 23, 2021 | Last Updated: 5 months ago

چین کی کنسائنو بایولوجکس کی تیار کردہ کرونا وائرس کے لاہور یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز میں ٹرائل کامیابی سے مکمل ہوگئے۔ ویکسین لگوانے والے کسی بھی شخص میں کوئی ری ایکشن رپورٹ نہیں ہوا۔

یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کے وائس چانسلر پروفیسر جاوید اکرم کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس کی ویکسی نیشن کے آغاز سے اب تک صرف 5 فیصد افراد کو معمولی بخار کی شکایت ہوئی۔

چیف سائنسٹیفک آفیسر کنسائنو ژو تاؤ کی جانب سے ستمبر 2020ء میں بتایا تھا کہ اسی ویکسین کے کلینک ٹرائل کے دوران بھی کسی طرح کے مسائل سامنے نہیں آئے تھے، صرف معمولی بخار، تھکاوٹ اور انجیکشن کی جگہ پر سوجن تھی۔

رپورٹ کے مطابق لاہور میں ویکسین کے ٹرائل میں شریک افراد میں 60 فیصد مرد اور 40 فیصد خواتین شامل تھیں، جن کی عمریں 18 سال سے زائد تھیں۔

مزید جانیے: پاکستان نے کسی کو کروناوائرس سے ’’علاج‘‘ کالائسنس نہیں دیا

پروفیسر اکرم کا کہنا تھا کہ ویکسین کے ٹرائل میں شریک 19 فیصد افراد عارضہ قلب اور شوگر جیسے امراض کے شکار تھے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ ان میں سے بیشتر افراد نے کرونا وائرس کیلئے اینٹی باڈیز تیار کرلیں جبکہ کچھ رضا کاروں میں 400 فیصد تک اینٹی باڈیز کی اطلاعات ہیں۔

پاکستان میں کنسائنو ویکسین کے ٹرائلز کا انعقاد ستمبر میں آغا خان یونیورسٹی اسپتال کراچی، انڈس اسپتال کراچی، شوکت خانم میموریل اسپتال لاہور، یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز لاہور اور شفاء انٹرنیشنل اسپتال اسلام آباد میں کیا گیا تھا۔ دیگر مقامات کے نتائج تاحال جاری نہیں کئے گئے۔

بلومبرگ کے مطابق جمعہ کو اے جے پی فارما پرائیویٹ لمیٹڈ کے ٹیکنیکل ایڈوائزر نے بتایا تھا کہ کنسائنو بایولوجکس نے پاکستان کو کرونا وائرس سے بچاؤ کی ویکسین کی 2 کروڑ ڈوزز کی پیشکش کی ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube