تحریک انصاف کو ڈنمارک سے بھی فنڈنگ ہوئی، خرم دستگیر

SAMAA | - Posted: Jan 19, 2021 | Last Updated: 3 months ago
Posted: Jan 19, 2021 | Last Updated: 3 months ago

سابق وزیر دفاع خرم دستگیر خان نے انکشاف کیا ہے کہ تحریک انصاف کو ڈنمارک سے بھی ہنڈی کے ذریعے فنڈنگ کی گئی ہے۔ جو شخص مشرق وسطیٰ میں تحریک انصاف کے لیے چندہ جمع کرتا تھا، اس کو یوٹیلٹی اسٹورز کارپوریشن کا سربراہ بنادیا گیا۔

سماء ٹی وی کے پروگرام ندیم ملک لائیو میں میزبان نے خرم دستگیر سے سوال پوچھا کہ تحریک انصاف کے پاس بیرون ملک سے فنڈ کیسے آیا۔ خرم دستگیر خان نے جواب دیا کہ فارن فنڈنگ تحریک انصاف کے اکاؤنٹس، ان کے ملازمین کے اکاؤنٹس اور ہنڈی کے ذریعے آئی۔

اس دوران پروگرام میں شریک فیصل واوڈا نے مداخلت کرتے ہوئے کہا کہ خواجہ آصف پاکستان کا وزیر دفاع ہوتے ہوئے دبئی کا اقامہ رکھتے تھے۔

خرم دستگیر نے اپنی بات جاری رکھتے ہوئے کہا کہ تحریک انصاف کو دبئی، یورپ اور ڈنمارک سے بھی فنڈنگ ہوئی۔ ندیم ملک نے حیرت کا اظہار کرتے ہوئے دوبارہ پوچھا کہ کیا ڈنمارک سے بھی پیسہ آیا ہے۔ خرم دستگیر نے جواب دیا کہ ڈنمارک سے پیسہ دبئی آیا اور وہاں سے ہنڈی کے ذریعے پاکستان بھیجا گیا۔

فیصل واوڈا اس پوری گفتگو کے دوران خواجہ آصف کے اقامے کا تذکرہ کرتے رہے مگر جب ندیم ملک نے ان سے پوچھا کہ فارن فنڈنگ کے بارے میں بات کریں۔ جس پر فیصل واوڈا نے کندھے اچکاتے ہوئے کہا کہ اس کا فیصلہ تو آنے دیں۔

خرم دستگیر نے ایک اور انکشاف کیا کہ مشرقی وسطیٰ میں تحریک انصاف کے فنڈ ریزنگ کے جو سربراہ تھے، وہ آج یوٹیلٹی اسٹورز کارپوریشن کے سربراہ ہیں۔ ندیم ملک نے ان سے پوچھا کہ یہ بات آپ ذمہ داری سے کہہ رہے ہیں۔ خرم دستگیر نے جواب دیا کہ یہ شخص ذوالفقار علی خان ہیں۔ آپ خود پوچھ لیں۔

ندیم ملک اپنے ٹاک شو میں فیصل واوڈا سے مسلسل فارن فنڈنگ کیس کے بارے میں پوچھتے رہے مگر وہ اس بارے میں بات کرنے کے بجائے کبھی خواجہ آصف کے اقامے اور کبھی ایوان فیلڈ اپارٹمنٹس کی کہانی سناتے رہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube