Tuesday, September 28, 2021  | 20 Safar, 1443

تحریک انصاف کو اسرائیل اور بھارت سے فنڈنگ ہوئی،مریم نواز

SAMAA | - Posted: Jan 19, 2021 | Last Updated: 8 months ago
SAMAA |
Posted: Jan 19, 2021 | Last Updated: 8 months ago

مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے الزام عائد کیا ہے کہ تحریک انصاف کو اسرائیل اور بھارت سے فنڈنگ ہوئی۔ وہ پیسہ ہنڈٰی کے ذریعے پاکستان آیا اور حکومت مخالف سازشوں پر خرچ ہوا۔

اسلام آباد میں شاہراہ دستور پر پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے مریم نواز نے کہا کہ اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے تصدیق کی ہے تحریک انصاف کے 23 خفیہ اکاؤنٹس ہیں جو الیکشن کمیشن آف پاکستان سے چھپائے گئے ہیں۔

مریم نواز نے تحریک انصاف کی جانب سے 6 سال تک فارن فنڈںگ کیس میں تاخیری حربوں اور تحقیقات روکنے کیلئے دائر درخواستوں کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ ایک منتخب وزیراعظم کے خلاف 60 دن میں رپورٹ آجاتی ہے اور 6 ماہ کیس کا فیصلہ ہوجاتا ہے جبکہ یہاں عمران خان سانپ بن کر بیٹھا ہے۔

مریم نواز نے احتجاج میں شریک کارکنان سے پوچھا کہ جانتے ہو یہ پیسہ پاکستان کیسے آیا۔ پھر انہوں نے خود ہی جواب دیا کہ ہنڈی کے ذریعے آیا۔ پھر پوچھا کہ جانتے ہو ناں ہنڈی کے ذریعے کون سا پیسہ آتا ہے۔ اس لیے یہ کنٹینر پر چڑھ کر کہتا تھا ہنڈی کے ذریعے پیسے بھیجو اور وہ پیسہ منتخب حکومت کے خلاف سازشوں میں پانی کی طرح بہایا۔

انہوں نے کہا کہ دو ملکوں سے بڑی فنڈنگ آئی جن میں ایک بھارت اور دوسرا اسرائیل ہے۔ وہ بھارت جو کشمیر میں ظلم ڈھا رہا ہے اور وہ اسرائیل جو فلسطین پر قابض ہے۔ بھارت سے جس شخص نے فنڈ دیا وہ بھارتیہ جنتا پارٹی کا ممبر ہے۔

ن لیگ کی نائب صدر نے کہا کہ ہم آج ایک ایسے سڑک پر موجود ہیں جس کو شاہراہ دستور کہا جاتا ہے۔ اس کے دونوں اطراف انصاف دینے والے ادارے موجود ہیں لیکن افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ ہم جس ملک میں رہتے ہیں وہاں کوئی آئین ہے نہ انصاف ہے۔ آج ہم اس لئے جمع ہوئے ہیں کہ الیکشن کمیشن کو اس کی ذمہ داریوں کا احساس دلائیں۔ چیف الیکشن کمشنر کو یاد دلائیں کہ یہ ادارہ پاکستان اور قوم کا ادارہ ہے۔ یہ وہ ادارہ ہے جس کو ووٹ کا امین بنایا گیا ہے۔ یہ وہ ادارہ ہے جس نے ووٹ کی عزت کروانی تھی۔

مولانا فضل الرحمان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ8  اگست 2018 کو اسی جگہ پر احتجاج کرکے 2018 کے انتخابات مسترد کرنے کا اعلان کیا تھا۔ آج پھر اسی مقام سے اسی حکومت کو مسترد کرتے ہیں۔

مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ الیکشن کمیشن کو بے بس قرار دیتے ہوئے کہا کہ طاقتور اداروں نے انتخابات پر قبضہ کیا، نتائج مرتب کیے اور ڈفلی بجانے والے کو قوم پر مسلط کیا۔ جس میں نہ حکومت چلانے کی صلاحیت ہے، نہ معیشت کی اور نہ ہی سیاست کی اہلیت ہے۔ ایک ناہل شخص کو حکمران اس لیے بنا گیا کہ یہ احمق سامنے رہے گا اور اصل حکومت پیچھے کھڑے ادارے کریں گے۔

انہوں نے وزیراعظم عمران خان کے خلاف اپنا پرانا الزام دہراتے ہوئے کہا کہ ’میں 2012 سے یہ بات کہہ رہا ہوں کہ یہ یہودی ایجنٹ ہے۔ آج پوری قوم پر یہ آشکار ہورہا ہے کہ اسرائیل اور بھارت نے تحریک انصاف کو فنڈ دیا۔

مولانا نے انکشاف کیا کہ 2013 کے الیکشن کے بعد مجھے بتایا گیا کہ یہ گلی کوچے اور مسجد مسجد تک جائے گا اور فضل الرحمان اکیلا رہ جائے اور مولوی بھی فضل الرحمان کے کھڑا نہیں رہے گا مگر جب خیبرپختونخوا میں ائمہ کو 10 ہزار اعزازیہ دینے کا اعلان کیا تو اس ایک بھی مولوی نہیں ملا۔ سب نے اعزازیہ ان کے منہ پر مارا۔

انہوں نے کہا کہ ’میں اعلان کرتا ہوں کہ یہودیوں کا پیسہ تمہارے منہ پر مارتے ہیں۔ یہ پیسہ علما کو نہیں سجتا، آپ کو سجتا ہے۔ علما یہودیوں کا پیسہ استعمال نہیں کریں گے۔ ہم بھوکے سوئیں گے لیکن تمہارے اعزازیہ پر لعنت بھیجتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان دشمن ممالک اسرائیل اور بھارت کے پیسوں سے ایک مشکوک شخص کو اس ملک کا حکمران بنا رہے ہو جو حسیاسیت کے لحاظ سے ایک ایٹمی طاقت ہے۔ پاکستان کی ایٹمی طاقت پر ایسے مشکوک انسان کو جس نے بھی بٹھایا، جس نے پشتیبانی کی اور جس نے بھی سہارا دیا ہے، وہ سب بھی مشکوک ہوجاتے ہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube