Saturday, September 25, 2021  | 17 Safar, 1443

ویکسین پرائیوٹ سیکٹرمنگوا رہا ہے، شہریوں کوپیسے دینا پڑیں گے

SAMAA | - Posted: Jan 16, 2021 | Last Updated: 8 months ago
SAMAA |
Posted: Jan 16, 2021 | Last Updated: 8 months ago

ہمیں 70سے80 فیصد اپنے لوگوں کو ویکسینیٹ کرنا ہے

وزيرصحت سندھ عذرا پيچوہو نے وفاقی حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ ڈریپ نے جس ویکسین کی اجازت دی ہے وہ پرائیویٹ سیکٹر منگوا رہا ہے۔ اگر پرائیویٹ سیکٹر ویکسین منگوائے گا تو شہریوں کو پیسے دینا پڑیں گے۔

وزيرصحت سندھ نے کراچی میں ڈاکٹر اقبال چوہدری کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ایسالگ رہا ہےہمارے ملک میں سب سےآخر میں کرونا ویکسین آئے گی، ہمیں 70سے80 فیصد اپنے لوگوں کو ویکسینیٹ کرنا ہے۔ چین سے کرونا کی ویکسین پر بات کرنا فیڈریشن کا کام ہے، پاکستان میں چین کی ویکسین کےٹرائل بھی ہوئےہیں۔

عذرا پيچوہو نے کہا کہ وفاق سے بات کروں گی کہ سندھ ویکسین پرائیویٹ سیکٹر سے خرید لے،اس طرح پاکستان میں ویکسینیشن کا آغاز ہوجائے گا۔

انھوں نے کہا کہ وائرس تیزی سے بدل رہا ہے ہم ابھی سے ویکسین لگا کر اسے روک سکتے ہیں، سائنافام ویکسین کے لگانے کے حوالے سے ہم وفاق سے بات کریں گے۔ ہم یہ ویکسین پرائیویٹ بھی خرید کر لگا سکتے ہیں، وفاق ہمیں اجازت دے ہم ویکسین لگائیں، ہم چاہتے ہیں ویکسین لگانے میں ہم پہل کریں۔ سائنا فام پورے چین اور عرب ممالک میں استعمال ہوچکی ہے۔ یہ ایک محفوظ ویکسین ہے۔

اس موقع پر ڈاکٹر اقبال چوہدری نے کہا کہ وقت نے ثابت کیا کہ وائرس میں تیزی سے تبدیلی آرہی ہے، ویکسین کی تیاری پر اربوں روپے لگ رہے ہیں۔ وائرس کے شکلوں میں اب تک 132 سے زائد تبدیلیاں رونما ہوئی ہیں، اگر وائرس بدلتا ہے تو ویکسین اور علاج دنوں کا طریقہ بدل جاتا ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube