ملک بھر میں بلیک آؤٹ ‘انسانی غلطی’ قرار

SAMAA | - Posted: Jan 12, 2021 | Last Updated: 3 months ago
SAMAA |
Posted: Jan 12, 2021 | Last Updated: 3 months ago

نیشنل ٹرانسیمشن اینڈ ڈسپیچ کمپنی نے ملک گیر بلیک آؤٹ کو ’انسانی غلطی‘ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ساری خرابی محض ایک سرکٹ بریکر غلط لگنے سے پیدا ہوئی۔ تحقیقات کے مطابق بریکر کی مینٹیننس بھی نیشنل پاور کنٹرول سینٹر کی منظوری کے بغیر کی جاتی رہی ہے۔

پاکستان بھر میں 9 اور 10 جنوری کی درمیانی شب بجلی کا بریک ڈاؤن ہوگیا تھا جس کی بحالی میں حکومت کو 24 گھنٹے سے زیادہ لگے۔ اس دوران ملک میں صنعت اور کاروبار زندگی معطل رہا جبکہ شہریوں کو بھی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔

نیشنل ٹرانسیمشن اینڈ ڈسپیچ کمپنی (این ٹی ڈی سی) نے وزارت توانائی کو رپورٹ ارسال کرتے ہوئے کہا ہے کہ گدو پاورپلانٹ کے سوئچ یارڈ میں ایک بریکر کی مییٹیننس کے دوران ارتھنگ کی گئی اور ڈے شفٹ کا عملہ ڈیوٹی ختم ہونے پر بریکر بند کیے بغیر چلا گیا جبکہ نائیٹ شفٹ والوں نے ارتھنگ ختم کیے بغیر ہی اسے بند کردیا جس کے نتیجے میں نتیجے میں پہلے گدو پاور پلانٹ بیٹھا اور اس کی ٹرانسمیشن لائنز ٹرپ کرگئیں۔ جب دباؤ دیگر گرڈز پر پڑا تو پلک چھپکتے ہی پورے ملک کی بجلی بند ہوگئی۔

این ٹی ڈی سی کے مطابق سوئچ یارڈ کا یہ سرکٹ بریکر براہ راست کنٹرول روم سے کلوز کیا گیا جو غلط تھا۔ یہ بھی بتایا گیا کہ بریکر کی میٹیننس کیلئے نیشنل پاور کنٹرول سنٹر سے منظوری بھی نہیں لی گئی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube