Friday, March 5, 2021  | 20 Rajab, 1442
ہوم   > پاکستان

واٹس ایپ کے متبادل آپشن کیا ہیں

SAMAA | - Posted: Jan 11, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Jan 11, 2021 | Last Updated: 2 months ago

واٹس ایپ کی نئی ڈیٹا پرائیویسی پالیسی نے بہت سارے صارفین کو تشویش میں مبتلا کردیا ہے۔ اس نئی پالیسی کے تحت واٹس ایپ صارفین کا ڈیٹا نہ صرف فیس بک بلکہ اس کی زیر ملکیت دیگر کمپنیوں کو بھی فراہم کیا جائے گا۔

اس وقت دنیا بھر میں صارفین کا ڈیٹا محفوظ رکھنے سے متعلق بڑی ٹیکنالوجی کمپنیوں کے کردار پر بحث ہورہی ہے اور بعض ممالک میں ان کو کڑے سوالات اور بھاری جرمانوں کا سامنا ہے۔

ایسی صورتحال میں واٹس ایپ کی نئی ڈیٹا پالیسی نے کافی لوگوں کو مشتعل کردیا ہے۔ بعض صارفین نے تو فوری طور پر پیغام رسانی کے مقاصد کے لئے واٹس ایپ کے متبادل ذرائع کی تلاش شروع کردی ہے۔

یہاں واٹس ایپ کے متبادل ایپلی کیشنز اور ان کا مختصر تعارف درج ہے۔

ٹیلیگرام

واٹس ایپ جیسے فیچرز رکھنے والی ایپلی کیشنز کے صارفین میں کئی ماہ سے روز بروز اضافہ ہورہا ہے۔ اس کی سیکیورٹی اور ڈیٹا پالیسی کا نظام اتنا سخت ہے کہ اس کے ’سیکریٹ مسیج‘ کو آج تک دنیا کا کوئی ملک اس کو توڑ نہ سکا۔ ٹیلی گرام کو 2013 میں روس سے تعلق رکھنے والے دو بھائیوں نے لانچ کیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: پرائیوسی پالیسی پر ٹیلی گرام نے واٹس ایپ کو ٹرول کردیا

ٹیلی گرام پر آڈیو، ویڈیو، گروپ کالنگ، براڈ کاسٹ سمیت تمام سہولتیں دستیاب ہیں۔ سخت ڈیٹا پالیسی کے باعث ٹیلی گرام صحافیوں میں بھی زیادہ مقبول ہے اور وہ اس پر باقاعدہ اپنے ’چینلز‘ تک چلاتے ہیں۔ خاص طور پر جن علاقوں میں شورش ہو، وہاں کے صحافی ’محفوظ رابطوں‘ اور آڈیو، ویڈیو مواد کے حصول اور ترسیل کیلئے ٹیلی گرام کا سہارا لیتے ہیں۔

سگنل

سگنل پیغام رسانی کیلئے سب سے بڑی آسان اور مفت ایپ ہے جو تمام بڑے پلیٹ فارمز پر استعمال کیلئے دستیاب ہے۔ سگنل میں آڈیو، ویڈیو، گروپ کالنگ، پیغام رسانی، تصاویر، لوکیشن سمیت تمام دیگر روزمرہ استعمال کے فیچرز موجود ہیں۔ اس کو ڈیسک ٹاپ پر بھی تمام فیچرز کے ساتھ استعمال کیا جاسکتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: واٹس ایپ پرائیویسی پرتحفظات،سربراہ کا بیان سامنےآگیا

الیکٹرک کار بنانے والی کمپنی تیسلا کے بانی ایلون مسک نے کچھ دن پہلے ہی اپنے مداحوں کو سگنل استعمال کرنے کا مشورہ دیا تھا۔ ان کے اس مشورے کے بعد سگنل کے صارفین میں حیرت انگیز اضافہ ہوا ہے اور گزشتہ چند روز کے دوران صارفین کے رش کی وجہ سے نئے آنے والوں کو اکاؤنٹ بنانے میں مشکلات کا بھی سامنا کرنا پڑا۔

وائبر

وائبر سے تو سب ہی واقف ہیں۔ واٹس ایپ سے پہلے یہاں وائبر مشہور ہوا اور آج بھی وائبر ٹیلی گرام کے مقابلے میں پاکستان میں زیادہ معروف ہے۔ اس میں بھی تمام روزمرہ کے فیچرز موجود ہیں۔ وائبر کی ڈیٹا پرائیویسی پالیسی بھی ’اینڈ ٹو اینڈ کرپٹڈُ‘ ہے۔ اس کو مارکیٹ میں آئے 10 برس ہوچکے ہیں۔

کِک ( Kik)

کِک ( Kik) ایک فوری میسجنگ ایپ ہے۔ اس میں اکاؤنٹ بنان کیلئے آپ کو فون نمبر کی ضرورت نہیں۔ اس کیلئے ایک ای میل کی ضرورت ہے اور چیٹس کو اسٹور کرنے فون میموری ہوتی ہے۔ ایک بار جب آپ فون تبدیل کرتے ہیں تو آپ چیٹس کھو دیتے ہیں۔ اسی وجہ سے یہ غیرمقبول ہے۔ اس کو بھی سب سے زیادہ محفوظ تصور کیا جاتا ہے۔ اس لیے یہ منشیات فروشی اور دیگر جرائم کیلئے بھی استعمال ہوئی اور اس کی شہرت کو نقصان پہنچا۔

وائر

یہ ایپلی کیشن اسکائپ کے شریک بانی نے بنائی اور اس میں بھی ’اینڈ ٹو اینڈ انکرپٹڈ‘ نظام ہے۔ اس میں بھی تمام استعمال کے فیچرز دستیاب ہیں۔ انڈرائڈ یا ایپل کے تمام پلیٹ فارمز سے ڈانلوڈ کرسکتے ہیں مگر یہ صارفین میں اتنی معروف نہیں۔

وی چیٹ

وی چیٹ WeChat)) ایک چینی میسجنگ ایپ ہے اور اس کے دنیا بھر میں ڈیڑھ ارب تک صارفین ہیں۔ فیچرز اس کے بھی واٹس ایپ جیسے ہی ہیں۔ یہ چین میں سب سے زیادہ مقبول ہے مگر مغربی ممالک میں اس کو بھی مشکوک نظروں سے دیکھا جاتا ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube