Monday, March 8, 2021  | 23 Rajab, 1442
ہوم   > پاکستان

ملک گیر بلیک آؤٹ: سات افسران معطل، تحقیقاتی کمیٹی قائم

SAMAA | - Posted: Jan 10, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Jan 10, 2021 | Last Updated: 2 months ago

حکومت نے ملک بھر میں بلیک آؤٹ کی تحقیقات کرنے کیلئے کمیٹی تشکیل دے دی ہے جبکہ ابتدائی طور پر گدو بیراج کے 7 افسران کو معطل کردیا ہے۔

سینیٹرل پاور جنریشن کمپنی کی جانب سے جاری اعلامیہ کے مطابق گدو بیراج کے اسسٹنٹ پلانٹ منیجر سہیل احمد، جونیئر انجنیئر دلدار علی چیمہ، فورمین علی حسن، آپریٹر ایاز حسین ڈہر، آپریٹر سعید احمد، اٹینڈنٹ سراج احمد میمن اور الیاس احمد کو معطل کردیا گیا ہے۔

اعلامیہ کے مطابق ابتدائی انکوائری میں ان اہلکاروں کی غفلت کے باعث بریک ڈاؤن کی صورتحال رونما ہوئی ہے اور ان کو تاحکم ثانی معطل فوری طور پر معطل کیا جاتا ہے۔

دوسری جانب نیشنل ٹرانسمیشن اینڈ ڈسپیچ کمپنی ( این ٹی ڈی سی) نے معاملے کی تحقیقات کیلئے 4 رکنی کمیٹی تشکیل دی ہے جس کی سربراہی ملک جاوید محمود کریں گے جبکہ دیگر ارکان میں غلام عباس میمن، عارف مجیب عثمانی اور سجاد اختر شامل ہیں۔

یہ 4 رکنی کمیٹی 7 دن کے اندر تحقیقات مکمل کرکے سفارشات کے ہمراہ پیش کرے گی۔ تحقیقات کے دوران اس بات کا تعین کیا جائے گا کہ ملک بھر میں بریک ڈاؤن کیوں ہوا۔ اس کے ذمہ دار کون ہیں یا کس کی غفلت سے بلیک آؤٹ ہوا۔

تحقیقاتی کمیٹی آئندہ ایسی صورتحال سے بچنے کیلئے تجاویز دے گی جس کی روشنی میں اقدامات اٹھائے جائیں گے۔

گزشتہ شب پاکستان بھر میں اچانک بجلی چلی گئی اور چاروں صوبے اچانک اندھیرے میں ڈوب گئے جس کے باعث گھریلو صارفین سمیت صنعتی صارفین کو بھی شدید مشکلات اور خسارے کا سامنا کرنا پڑا اور اہم قومی تنصیبات بھی متاثر ہوئیں۔

ایئرپورٹس کو جنریٹر سے چلانے کی کوشش کی گئی جبکہ وزارت توانائی کے دفاتر میں بھی جنریٹر استعمال کرکے صورتحال کی مانیٹرنگ کی گئی۔ وزارت توانائی نے ایک گھنٹہ تاخیر سے ملک گیر بریک ڈاؤن کی تصدیق کی اور تقریبا 20 گھنٹے بعد ملک بھر میں بجلی بحال کرنے میں کامیاب ہوئی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube