Thursday, March 4, 2021  | 19 Rajab, 1442
ہوم   > پاکستان

مندر کی بحالی کاکام 2ہفتے میں شروع کرنے کا حکم

SAMAA | - Posted: Jan 5, 2021 | Last Updated: 2 months ago
Posted: Jan 5, 2021 | Last Updated: 2 months ago
Karak Temple

فوٹو: اے ایف پی

سپریم کورٹ نے خیبر پختونخوا کے ضلع کرک میں جلائے گئے مندر کی بحالی کا کام 2 ہفتے میں شروع کرنے کا حکم دے دیا۔

منگل 5 جنوری کو کرک میں ہندو سمادھی جلانے سے متعلق ازخود نوٹس کیس کی سماعت ہوئی۔ عدالت نے متروکہ وقف املاک بورڈ سے ملک بھر کے غیر فعال مندروں اور زمینوں پر قبضے کی تفصیلات طلب کرلیں۔

دوران سماعت چیف جسٹس گلزار احمد نے چیئرمین متروکہ وقف املاک بورڈ کی سرزنش کی۔ عدالت نے متروکہ املاک پر قبضے اور تجاوزات کی تفصیلات بھی 2 ہفتے میں پیش کرنے کا حکم دیا۔

چیف جسٹس گلزار احمد نے استفسار کیا کہ بتایا جائے کُل کتنے مندر ہیں اور فعال کتنے ہیں۔ حکومت کی رٹ برقرار رہنی چاہیے۔ ریمارکس دیے کہ مولوی شریف کچھ دن میں ضمانت لے کر باہر آ جائے گا۔ سمادھی بحالی کی رقم مولوی شریف اور اس کے گینگ سے وصول کریں۔

چیف سیکرٹری خیبرپختونخوا نے عدالت کو بتایا کہ ہندو سمادھی کو دوبارہ بحال کریں گے۔

کرک میں مندر جلانے کا واقعہ: افسران سمیت 8اہلکار معطل

بدھ 30 دسمبر کو مشتعل افراد نے ٹیری میں ہندو مندر کو آگ لگانے کے بعد مسمار کر دیا تھا۔ واضح رہے کہ قیام پاکستان سے قبل کا یہ مندر برصغیر کی تقسیم کے بعد بند کردیا گیا تھا تاہم 2015ء میں سپریم کورٹ کی ہدایت پر اسے کھولا گیا۔

مقامی ہندو اور مسلم برادری کے درمیان ایک ہفتہ قبل مندر سے ملحقہ اراضی پر تعمیر کے حوالے سے ایک معاہدہ بھی طے پایا تھا۔

دوسری جانب چیف جسٹس نے پنجاب حکومت سے لاہور شیخوپورہ موٹروے پر مسیحی لڑکی سے ریپ کے واقعہ کی رپورٹ بھی مانگ لی۔

دوران سماعت سپریم کورٹ نے موٹر ویز کی سیکیورٹی پر سوال اٹھائے۔ چیف جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس دیے کہ پہلے بھی موٹروے پر ریپ کا واقعہ پیش آیا تھا۔ عدالت نے پنجاب حکومت سے دونوں واقعات پر رپورٹ طلب کر لی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube