تشدد کا شکار کمسن ملازمہ چائلڈ پروٹیکشن بیورو کے سپرد

SAMAA | - Posted: Dec 8, 2020 | Last Updated: 6 months ago
SAMAA |
Posted: Dec 8, 2020 | Last Updated: 6 months ago

CHILD RAPE

فيصل آباد ميں تشدد کا نشانہ بننے والی کم سن ملازمہ کو چائلڈ پروٹیکشن بیورو کے حوالے کردیا گیا۔ عدالت نے تشدد کے مقدمے میں نامزد رانا منیر، ان کی بیٹی اور داماد کو 14 دسمبر تک ضمانت قبل از گرفتاری دے دی۔

تشدد کا شکار بننے والی کم سن صدف منگل کو فیصل آباد کی سیشن کورٹ میں پیش ہوئی۔ ایڈیشنل اینڈ سیشن جج نے 11 سالہ بچی کو سات روز کے لئے چائلد پروٹیکشن بیورو کی تحویل میں دے دیا۔

ٹیم صدف کو ساتھ لیجانے لگی تو اس کی ماں نے بھیجنے سے انکار کردیا مگر حکام نے انہیں سمجھایا تو انہوں نے چائلد پروٹیکشن بیورو کے حوالے کردیا۔

انسانی حقوق کے کارکن حسان نیازی نے بتایا کہ بچی کا میڈیکل اور نفسیاتی معائنہ کروائیں گے۔ عدالت نے کہا ہے کہ بچی اور اس کے گھر والوں پر دباو ڈالا گیا ہے۔

بچی پر تشدد کے مقدمہ میں رانا منیر کے داماد اور بیٹی کو نامزد کیا گیا تو انہوں نے عدالت سے 14 دسمبر تک قبل از گرفتاری ضمانت حاصل کرلی۔

رانا منیر کے وکیل نے کہا کہ ان کے کلائنٹ کو تنگ کیا جارہا ہے۔ اس کی ساری فیملی کے گھروں میں پولیس چھاپے ماررہی ہے۔

چائلڈ پروٹیکشن بیورو نے عدالت سے رانا منیر کے نواسے کو بھی تحویل میں دینے کی استدعا کی ہے۔ واقعے کی سی سی ٹی وی فوٹیج میں اس کو بھی بچی پر تشدد کرتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube