پشاور:6کرونامریضوں کاانتقال،ڈائریکٹرسمیت7ملازمین معطل

SAMAA | - Posted: Dec 7, 2020 | Last Updated: 4 months ago
SAMAA |
Posted: Dec 7, 2020 | Last Updated: 4 months ago

پشاور: اسپتال کے باہر کا منظر

پاکستان کے صوبے خیبر پختونخوا کے صوبائی دارالحکومت پشاور میں آکسیجن کی کمی سے 6 مریضوں کے انتقال پر اسپتال کے ڈائریکٹر سمیت 7 ملازمین کو معطل کردیا گیا ہے۔

پشاور کے خیبر ٹیچنگ اسپتال میں آکسیجن بروقت نہ ملنے پر 6 کرونا سے متاثرہ مریض ہفتہ 5 دسمبر کی رات انتقال کرگئے تھے۔

معاملے اتوار کی صبح منظر عام پر آنے کے بعد وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان  اور صوبائی وزیر صحت تیمور جھگڑا کی جانب سے فوری نوٹس لیا گیا اور انکوائری کمیٹی قائم کی گئی۔

انتظامیہ کی فیکٹ فائنڈنگ رپورٹ میں اسپتال کے ڈائریکٹر سمیت 7 ملازمین کے خلاف فرائض میں غفلت سامنے آنے پر انہیں فوری طور پر معطل کردیا گیا ہے۔

رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا کہ پاکستان آکسیجن لیمٹڈ سے آکسیجن لینے کے معاملے پر بھی مزید تفتیش کی جائے گی۔

انکوائری رپورٹ میں اسپتال کےنظام کو بھی ناکامی کا ذمہ دار قرار دیا گیا ہے۔ اسپتال میں ایمرجنسی کے وقت کوئی متبادل آکسیجن سلنڈرز یا اس کی فراہمی کا انتظام نہیں تھا۔ انتظامیہ کی جانب سے آکسیجن پلانٹ پر تعینات افسران کی غیر حاضری سے متعلق بھی آگاہ نہیں کیا گیا تھا۔

سپلائی چین ڈیمارٹمنٹ بھی متعلق تعداد میں آکسیجن سلنڈر مہیا نہیں کرسکا۔ آکسیجن پلانٹ میں تربیت اور تعلیم یافتہ افراد کا فقدان تھا۔

رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ آکسیجن پلانٹ کیلئے تربیت یافتہ اور تعلیم یافتہ افراد کو تعینات کیا جائے گا، جب کہ اسپتال میں کسی بھی ہنگامی حالت سے نمٹنے کیلئے آکسیجن کا متبادل نظام بھی رکھا جائے گا۔ مستقبل میں اس قسم کے حالات سے نمٹنے کیلئے اسپتال میں مشقیں بھی کرائی جائیں گی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube