Friday, January 22, 2021  | 7 Jamadilakhir, 1442
ہوم   > پاکستان

کروناکاپھیلاؤ، ایس بی سی اے کراچی میں پبلک ڈیلنگ بند

SAMAA | - Posted: Dec 2, 2020 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Dec 2, 2020 | Last Updated: 2 months ago

سندھ میں کرونا وائرس کے کیسز میں تیزی سے اضافے پر سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی نے پبلنگ ڈیلنگ بند کردی، سوک سینٹر کراچی میں قائم مرکزی دفتر میں عوام کے داخلے پر پابندی لگادی۔

ایس بی سی اے کے نئے ڈائریکٹر جنرل شمس الدین سومرو نے کرونا وائرس کے پھیلاؤ پر ہیڈ کوارٹرز میں عوام کے داخلے پر پابندی کا حکم نامہ جاری کیا۔

شمس الدین سومرو نے نومبر میں ایس بی سی اے چیئرمین کے عہدے کا اضافی چارج سنبھالا تھا، وہ صوبائی محتسب آفس کے ایڈیشنل سیکریٹری کے طور پر خدمات انجام دے رہے ہیں۔

ڈی جی سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کی جانب سے جاری حکم نامے میں کہا گیا ہے کہ آفس کا عملہ بشمول آفسران اور حکام روٹیشن کی بنیاد پر آفس آسکتے ہیں۔ ایس بی سی اے کے 50 فیصد عملے کو متبادل دنوں میں آفس آنے کی اجازت ہوگی۔

ایس بی سی اے کے ڈائریکٹر انفارمیشن علی مہدی کاظمی کا کہنا ہے کہ عام لوگوں جو اپنا بلڈنگ پلان حاصل کرنا چاہتے ہیں وہ آن لائن منظوری کیلئے سنگل ویڈیو فیسیلٹی (ایس ڈبلیو ایف) پر درخواست دے سکتے ہیں۔

ایس بی سی اے سے منظور شدہ ماہر تعمیر اور انجینئر اپنے کلائنٹس کی جانب سے بلڈنگ پلانز کی منظوری کیلئے آن لائن درخواستیں دے سکتے ہیں۔

علی مہدی نے بتایا رہائشی بلڈنگ پلانز کی منظوری سنگل ونڈو فیسیلٹی کے ذریعے 7 سے 10 دن میں حاصل کی جاسکتی ہے۔

ایس بی سی اے ڈائریکٹر انفارمیشن کا مزید کہنا ہے کہ سنگل ونڈو فیسیلٹی آفس بلڈنگ پلانز کی منظوری کیلئے آنے والوں کیلئے کھلا رہے گا، ایک وقت میں 5 افراد ایس ڈبلیو ایف آفس میں آسکتے ہیں۔

علی مہدی کاظمی نے پابندی عائد کرنے کی وجوہات کے مقاصد بتاتے ہوئے کہا کہ عام طور پر دیکھا گیا کہ کسی بھی شخص کے ساتھ دیگر 3 سے 4 افراد بھی ایس بی سی اے بلڈنگ میں داخل ہوتے ہیں اور ڈائریکٹرز کے کمروں میں بیٹھ جاتے ہیں، جس کے باعث سماجی فاصلہ برقرار رکھنے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

عام لوگ غیر قانونی تعمیرات سے متعلق اپنی تحریری شکایات، قومی شناختی کارڈ کی کاپی کے ہمراہ ایس بی سی اے کے مرکزی دروازے پر نصب کمپلینٹ باکس میں ڈال سکتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ضروری کارروائی کیلئے یہ درخواستیں براہ راست ایس بی سی اے ڈائریکٹر جنرل آفس بھجوادی جائیں گی، جہاں سے یہ متعلقہ ٹاؤن ڈائریکٹرز کو بھجوادی جائیں گی۔

علی مہدی کاظمی کے مطابق غیر قانونی تعمیرات کیخلاف شکایات کے اندراج کیلئے ایس بی سی اے کا شکایت نمبر 1093 اس وقت غیر فعال ہے۔ اس ہیلپ لائن کا اجراء وزیر بلدیات سندھ سید ناصر حسین شاہ نے فروری 2020ء میں کیا تھا۔

ایس بی سی اے افسر کا کہنا ہے کہ لوگ اپنی شکایات کا اندراج ای میل کے ذریعے ایس بی سی اے کے سرکاری پتے پر بھی کراسکتے ہیں۔ sbca@sbca.gos.pk

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube