Wednesday, January 26, 2022  | 22 Jamadilakhir, 1443

جیکب آباد:بچوں کی شادی کروانے پر2 افراد گرفتار

SAMAA | - Posted: Nov 15, 2020 | Last Updated: 1 year ago
SAMAA |
Posted: Nov 15, 2020 | Last Updated: 1 year ago

جیکب آباد میں بچوں کی شادی کروانے پر 2 افراد کو گرفتار کرلیا گیا۔

پولیس نے بتایا ہے کہ اتوار کوجیکب آباد کے علاقے تھل میں 12سالہ لڑکے کا10سال کی لڑکی سے نکاح ہوا۔ پڑوسیوں کی اطلاع پر پولیس نے چھاپا مارا اور دلہے کے بھائی سمیت دلہن کے والد کو گرفتارکرلیا۔ پولیس نے جب چھاپا مارا تو رخصتی ہونے والی تھی۔ موقع سے نکاح خواں فرارہونے میں کامیاب ہوگیا۔

پولیس نے بتایا ہے کہ دولہا دلہن کو بھی حراست میں لیا گیا ہے اورچاروں افراد کوعدالت میں پیش کیا جائے گا۔ تھل ایس ایچ او گڑھی حسان نے بتایا کہ بچی کو شیلٹر ہوم بھیج دیا گیا ہے جبکہ لڑکے کو تھانے میں رکھا گیا ہے۔

پولیس نے سندھ میرج رسٹرینٹ ایکٹ 2013 کے سیکشن4 اور 5 کے تحت ایف آئی آر درج کرلی ہے۔ قانون کے مطابق لڑکیوں کےلیے شادی کی کم سے کم عمر16 برس اور لڑکے کی18 برس ہوتی ہے۔ اس قانون کی خلاف ورزی پر2 سال قید اور 1 لاکھ روپے جرمانے کی سزا ہوسکتی ہے۔

عالمی ادارہ صحت  کی رپورٹ ڈیموگریفکس آف چائلڈ میرج اِن پاکستان کے مطابق ملک میں 21 فیصد لڑکیوں کی 18 سال کی عمر تک پہنچنےسے پہلے شادی ہوجاتی ہے۔ سندھ میں یہ شرح لڑکیوں کے لیے 72 فیصد اور لڑکوں کی 25 فیصد ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube