Saturday, November 28, 2020  | 11 Rabiulakhir, 1442
ہوم   > پاکستان

لاہوروالےآج سےجدید ترین ٹرین میں سفرکریں گے

SAMAA | - Posted: Oct 26, 2020 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Oct 26, 2020 | Last Updated: 1 month ago

یکطرفہ کرایہ 40 روپے

لاہور ميں اورنج لائن ميٹرو ٹرين آج باقاعدہ عوام کیلئے چلا دی گئی ہے۔ منصوبے کے افتتاح کے بعد آج پیر 26 اکتوبر کو پہلی بار مسافر سفر کر رہے ہيں۔

لاہور والے ملک کی پہلی جديد ترين اليکٹرک ٹرين پر 40 روپے کے يک طرفہ کرائے ميں سفر کا لطف اٹھا رہے ہيں۔ ٹرین روزانہ تقریباً ڈھائی لاکھ مسافروں کو ان کی منازل تک پہنچائے گی۔

ٹرين ڈيرہ گجراں سے علي ٹاؤن رائے ونڈ روڈ تک چلے گی۔ ٹرین 27 کلوميٹر کے ٹريک پر 26 اسٹيشنز قائم کیے گئے ہیں۔ ٹرين 80 کلوميٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے 45 منٹ ميں يہ سفر مکمل کرے گی۔

ٹرین کے اوقات

ٹرين ابتدائی طور پر صبح ساڑھے 7 سے رات 8 بجے تک چلے گی۔ جی ٹی روڈ پر ڈيرہ گجراں کے علاقے ميں اورنج لائن ميٹرو ٹرين کا وسيع و عريض ڈپو بنايا گيا ہے، ٹرین کا آغاز یہاں سے ہوگا۔

ٹرین میں سیٹیں

اورنج لائن کے ليے 27 جديد ٹرينيں چين سے منگوائی گئی ہیں۔ ہر ٹرين میں 5 بوگياں ہیں۔ ايک بوگی ميں 60 سيٹيں ہيں اور ہر بوگی ميں 200 مسافر سوار ہو سکتے ہيں۔

اسٹیشنز کون کون سے ہیں؟

ٹرين ميں خواتين اور معذور افراد کے ليے عليحدہ سيٹيں مختص ہيں۔ 27 کلوميٹر کے ٹريک پر 26 اسٹيشن بنائے گئے ہيں، جب کہ 27 کلوميٹر کا فاصلہ تقريبا پينتاليس منٹ ميں طے کيا جائے گا۔ 2 زير زمين اور 24 اسٹيشن ايليويٹڈ يعنی بلندی پر ہيں۔

ٹرین کا روٹ

ٹرين ڈيرا گجراں سے شروع ہوگا، جو محمود بوٹی، لکشمی چوک، جی پی او مال روڈ، ملتان روڈ ، چوبر جی ، ٹھوکر نياز بيگ، رائے ونڈ روڈ سے ہوتے ہوئے آخر ميں علی ٹاؤن پہنچے گی۔ اس کے علاوہ ٹرین کا گزر ودھا، اسلام باغ، سلامت پورہ، محمود بوٹی، پاکستان منٹ، شالیمار گارڈنز، باغبان پورہ، یو ای ٹی، لاہور ریلوے اسٹیشن، لکشمی چوک، جی پی او، انارکلی، چوبرجی، گلشن راوی، سمن آباد، بند روڈ، صلاح الدین روڈ، شاہ نور، سبزہ زار، اعوان ٹاؤن، واحدت روڈ، ہنجروال، کینال، ٹھوکر نیاز بیگ اور علی ٹاؤن سے ہوگا۔ تقریباً 25 کلومیٹر کا ٹریک زمین کے اوپر اور لکشمی سے چوبرجی تک کا 1.72 کلومیٹر کا ٹرین ٹریک زیر زمین تعمیر کیا گیا ہے۔ اس ٹریک پر چلانے کے لیے 27 ٹرینیں چین سے خریدی گئی ہیں۔ جبکہ ایک ٹرین کے پیچھے 5 بوگیاں لگائی جائیں گی۔

ٹرین کا یکطرفہ کرایہ

یہ منصوبہ تين سو ارب روپے کی لاگت سے مکمل ہوا ہے۔ محکمہ ٹرانسپورٹ اور محکمہ خزانہ کی مشاورت کے بعد 40 سے 50 روپے کرايہ رکھا جائے گا۔ اورنج لائن ٹرین منصوبے کو لاہور شہر کے لیے ’ماس ٹرانزٹ‘ منصوبہ بھی کہا جاتا ہے۔ لاہور شہر آبادی کے لحاظ سے صوبہ پنجاب کا سب سے بڑا شہر ہے۔ جس کی وجہ سے لاہور شہر میں ماس ٹرانزٹ پراجکیٹ متعارف کروانے کا منصوبہ بنایا گیا۔

ٹرین میں اسکرینز

اورنج ٹرین میں مسافروں کی رہنمائی کے لیے ٹرین کے اندر اسکرینز نصب کی گئی ہیں جس سے انہیں اسٹیشنز سے متعلق معلومات مل سکیں گی۔ مسافر ڈیرہ گجراں سے 45 منٹ میں علی ٹاؤن تک پہنچ سکیں گے۔ اس کے علاوہ اسٹیشنز پر ٹکٹ خریدنے کے لیے خودکار مشینیں بھی نصب کی گئی ہیں۔ پنجاب ماس ٹرانزٹ اتھارٹی کے مطابق اس سے قبل لاہور شہر میں میٹرو بس پر روزانہ سفر کرنے والے مسافروں کی تعداد تقریباً 1 لاکھ 79 ہزار کے قریب ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube