Tuesday, November 24, 2020  | 7 Rabiulakhir, 1442
ہوم   > پاکستان

وزیراعلیٰ سندھ نے اعلیٰ پولیس افسران کا اجلاس طلب کرلیا

SAMAA | - Posted: Oct 21, 2020 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Oct 21, 2020 | Last Updated: 1 month ago

MURAD ALI SHAH

آئی جی سندھ کے اغواء اور چھٹیوں پر جانے کے معاملے پر وزيراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے پوليس کے اعلیٰ افسران کا اجلاس آج صبح طلب کرليا۔

مراد علی شاہ کی صدارت ميں اجلاس وزيراعلیٰ ہاوس ميں ہوگا جس میں آئی جی سندھ، ایڈیشنل آئی جی کراچی، ایڈیشنل آئی جی حیدرآباد اور سکھر رینج اور ایڈیشنل آئی جی اسپیشل برانچ بھی شرکت کریں گے۔

اس کے علاوہ شہر میں موجود سندھ پولیس کے تمام ڈی آئی جیز بھی اجلاس میں شریک ہوں گے۔

دوسری جانب آرمی چیف کی یقین دہانی کے بعد آئی جی سندھ مشتاق مہر نے چھٹيوں پر جانے کا فيصلہ موخر کرتے ہوئے پولیس افسران سے کہا ہے کہ وسيع تر قومی مفاد ميں چھٹيوں کا فيصلہ 10 دن کيلئے واپس لے ليں۔

سندھ پوليس کے ترجمان کے آرمی چيف نے معاملے کا نوٹس ليتے ہوئے غیر جانبدارانہ انکوائری کا یقین دلایا جس پر آرمی چیف کے شکر گزار ہيں۔ سندھ پوليس کے ٹوئٹر پيغام ميں کہا گيا ہے کہ چھٹيوں کا فيصلہ تحقيقات مکمل ہونے تک موخرکيا گيا۔

اس سے پہلے چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو اپنے وزیراعلیٰ کو لیے آئی جی سندھ ہاؤس پہنچے جہاں آئی جی سندھ سمیت دیگر افسران بات جیت کی گئی۔

بلاول بھٹو نے آرمی چیف کی جانب سے کراچی واقعے کی شفاف تحقیقات کی یقین دہائی سے متعلق بھی آگا کیا اور بتایا کہ واقعے کی تحقیقات کے نتائج جلد سامنے آجائیں گے۔

آئی جی کے ساتھ کیا ہوا

کیپٹن صفدر کی گرفتاری کے بعد مریم نواز نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا تھا کہ آئی جی سندھ کو رات کی پچھلی پہر گھر سے اٹھاکر سیکٹر کمانڈر کے آفس میں لے جایا گیا اور ان سے زبردستی گرفتاری کے آرڈر پر دستخط کروائے گئے۔ اس میں کون لوگ شامل تھے، وہ سب نے دیکھے ہیں۔ اس کے گواہ موجود ہیں۔

مسلم لیگ نواز کے رہنما محمد زبیر نے کہا تھا کہ آئی جی سندھ مشتاق مہر کو ان کے گھر سے اغوا کرکے سیکٹر کمانڈر کے آفس لے جایا گیا جہاں ایڈیشنل آئی جی کو بھی لایا گیا تھا۔

مریم نواز نے منگل کی شام پریس کانفرنس میں کہا کہ آئی جی کے گھر کا گھیراؤ کیا گیا اور پھر ان کو گھر سے نکال کر نامعلوم مقام پر لے جایا گیا۔ آدھی رات کو نعرے لگانے پر کون سی میٹنگ ہوتی ہے۔ یہ سندھ کے عوام کی توہین ہے۔ اس کو برداشت نہیں کریں گے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube