Saturday, November 28, 2020  | 11 Rabiulakhir, 1442
ہوم   > پاکستان

آئی جی کی تضحیک: سندھ پولیس کا بیان سامنے آگیا

SAMAA | - Posted: Oct 20, 2020 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Oct 20, 2020 | Last Updated: 1 month ago

سندھ پولیس نے آئی جی کے ساتھ پیش آنے والے واقعہ پر پہلی مرتبہ تفصیلی بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ رات کو پیش آنے والے بدقسمت واقعے نے پولیس کے تمام افسران اور جوانوں میں غم و غصہ پھیل گیا ہے۔

سندھ پولیس کے سربراہ سمیت 100 کے قریب اعلیٰ افسران نے منگل کی شام اچانک چھٹی کی درخواستیں دیتے ہوئے کہا تھا کہ کیپٹن صفدر کے خلاف مقدمہ درج کروانے سے لیکر ان کو گرفتار کروانے تک جس طرح پولیس پر دباؤ ڈالا گیا اور ان کی تضحیک کی گئی، اس سے پولیس کا مورال ڈاؤن ہوگیا ہے۔ ایسی صورتحال میں پیشہ ورانہ ذمہ داریاں انجام دینا ممکن نہیں ہے۔

بلاول بھٹو زرداری نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے سندھ پولیس کے سربراہ کے ساتھ ہونے والے واقعہ کی مذمت کی اور آرمی چیف سے مطالبہ کیا کہ اپنے ادارے کے افسران کے خلاف تحقیقات کرکے قانونی کارروائی کریں۔ آرمی چیف نے نوٹس لیکر کور کمانڈر کراچی کو تحقیقات کا حکم دیا ہے۔

سندھ پولیس نے دو دن کی خاموشی کے بعد ٹوئٹر پر تفصیلی بیان میں کہا ہے کہ پیر کی صبح سویرے پیش آنے والے واقعہ کے بعد آئی جی سندھ نے چھٹی پر جانے کا فیصلہ کیا اور اس کے نتیجے میں تمام افسران نے فیصلہ کیا کہ وہ بھی سندھ پولیس کی تذلیل کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے چھٹی کے لئے درخواست دیں گے۔

بیان کے مطابق یہ عمل تمام افسران کو پہنچنے والے دلی دکھ کا نتیجہ تھا اور یہ درخواستیں تمام افسران نے اپنی مرضی سے دیں کیوں کہ اس واقعہ سے محکمہ کے ہر ایک جوان اور افسر کی تضحیک ہوئی۔

سندھ پولیس نے واقعے کا نوٹس لینے اور تحقیقات کا حکم دینے پر آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا شکریہ ادا کیا کرتے ہوئے کہا ہے قمر جاوید باجوہ نے شفاف اور غیرجانبدار تحقیقات کی یقین دہانی کروائی ہے جس سے پولیس کا وقار بحال ہوگا۔

سندھ پولیس نے آئی جی ہاؤس آمد اور افسران و جوانوں سے اظہار یجکہتی پر پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اور وزیراعلیٰ سید مراد علی شاہ کا بھی شکریہ ادا کیا۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ سندھ پولیس ہمیشہ ایک منظم فورس رہی ہے جو تمام اہم قومی اداروں کے مابین ادارہ جاتی ہم آہنگی پر یقین رکھتی ہے اور اس صوبے کے شہریوں کی خدمت اور ان کی حفاظت کے لئے اپنی ذمہ داری سے بخوبی واقف ہے۔ اس لیے آئی جی نے اپنی چھٹی کی درخواست عارضی طور پر واپس لی ہے۔

آئی جی سندھ نے تمام پولیس افسران کو بھی ہدایت کی ہے کہ وسیع تر قومی مفاد میں آرمی چیف کی اعلان کردہ انکوائری رپورٹ کے آنے تک اپنی درخواستیں 10 کے لیے موخر کردیں۔

آئی جی کے ساتھ کیا ہوا

کیپٹن صفدر کی گرفتاری کے بعد مریم نواز نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا تھا کہ آئی جی سندھ کو رات کی پچھلی پہر گھر سے اٹھاکر سیکٹر کمانڈر کے آفس میں لے جایا گیا اور ان سے زبردستی گرفتاری کے آرڈر پر دستخط کروائے گئے۔ اس میں کون لوگ شامل تھے، وہ سب نے دیکھے ہیں۔ اس کے گواہ موجود ہیں۔

مسلم لیگ نواز کے رہنما محمد زبیر نے کہا تھا کہ آئی جی سندھ مشتاق مہر کو ان کے گھر سے اغوا کرکے سیکٹر کمانڈر کے آفس لے جایا گیا جہاں ایڈیشنل آئی جی کو بھی لایا گیا تھا۔

مریم نواز نے منگل کی شام پریس کانفرنس میں کہا کہ آئی جی کے گھر کا گھیراؤ کیا گیا اور پھر ان کو گھر سے نکال کر نامعلوم مقام پر لے جایا گیا۔ آدھی رات کو نعرے لگانے پر کون سی میٹنگ ہوتی ہے۔ یہ سندھ کے عوام کی توہین ہے۔ اس کو برداشت نہیں کریں گے۔

WhatsApp FaceBook

One Comment

  1. ali  October 21, 2020 1:29 pm/ Reply

    Unfortunately, everything is true whatever N league is stating

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube