Monday, December 6, 2021  | 30 Rabiulakhir, 1443

بابری مسجد انہدام کیس کے فیصلے پر پاکستان کی مذمت

SAMAA | - Posted: Sep 30, 2020 | Last Updated: 1 year ago
Posted: Sep 30, 2020 | Last Updated: 1 year ago
Foreign office

فائل فوٹو

بابری مسجد انہدام کیس میں ملزمان کی بریت پر پاکستان نے بھارتی عدالت کے شرمناک فیصلے کی شدید مذمت کی ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ نے بابری مسجد گرانے میں ملوث کرداروں کی بریت بھارتی نظام انصاف کے منہ پر طمانچہ قرار دیا ہے۔

ترجمان نے کہا کہ پاکستان بھارتی عدالت کے فیصلے کو مسترد کرتا ہے۔ بی جے پی کی ہندو نواز حکومت اقلیتوں کو روز اول سے نشانہ بنا رہی ہے اور مسجد شہید کرنے کے نتیجے میں بی جے پی کی زیر قیادت فرقہ وارانہ تشدد ہوا۔

بابری مسجد شہادت کیس میں تمام 32 ملزمان بری

ترجمان کے مطابق بھارتی عدالت کے فیصلے سے بھارت سمیت دنیا بھر کے مسلمانوں کی دل آزاری ہوئی اور دنیا پر ثابت ہوگیا کہ ہندوتوا سے متاثر بھارتی عدلیہ انصاف کرنے میں ناکام ہوگئی۔

بی جے پی نے منصوبے سے ہندو رائے عامہ کو بھڑکانے کے لیے رتھ یاترا کی تھی اور انتہا پسند ہندووں جماعتیں بی جے پی، وشوا ہندو پرشت اور سنگھ پریوار نے عوام کو تشدد پر اُکسایا جس کے  نتیجے میں ہزاروں افراد ہلاک ہوئے۔

بھارت ميں تاريخی بابری مسجد کو شہيد کرنے کے کيس میں 28 سال بعد تمام 32 ملزمان کو بری کر دیا گیا تھا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube