Thursday, October 29, 2020  | 11 Rabiulawal, 1442
ہوم   > پاکستان

بھارت نے کشمیر میں بچوں پرکلسٹربم مارے،آئی ایس پی آر

SAMAA | - Posted: Sep 24, 2020 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Sep 24, 2020 | Last Updated: 1 month ago

عالمی ادارہ خوراک کے حکام بھی موجود

ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار کا کہنا ہے کہ بین الاقوامی قوانین کے تحت کلسٹر بموں کا استعمال ممنوع ہے، اس کے باوجود بھارت نے معصوم بچوں اور بے گناہ شہریوں کو کلسٹر بموں سے مارا۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ ( آئی ایس پی آر) کے مطابق ڈی جی آئی ایس پی آر نے مختلف ممالک کے سفیروں اور اتاشیوں کو پریس بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ بھارت کشمیر میں عالمی قوانین کی دھجیاں بکھیر رہا ہے۔ بین الاقوامی قوانین کے تحت کلسٹر بموں کا استعمال ممنوع ہے۔ بھارت کی جانب سے کلسٹر بموں سے معصوم بچے اور بے گناہ شہری مارے گئے۔

[caption id="attachment_2049281" align="alignright" width="800"] فائل فوٹو[/caption]

انہوں نے کہا کہ سال 2020 میں اب تک 2333 بار ایل او سی پر سیز فائر کی خلاف ورزی کی گئی۔ ان تمام تر حملوں کے باوجود پاکستان آرمی نے کبھی بھارتی سرزمین پر آبادی کو نشانہ نہیں بنایا۔ پاک فوج پیشہ ورانہ فورس ہے، جو صرف فوج کی پوسٹوں کو نشانہ بناتی ہے۔ بھارتی فوج کی طرف سے سول آبادی کو نشانہ بنایا جاتا ہے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے بتایا کہ جولائی 2019 میں نیلم ویلی میں کلسٹر بموں کا استعمال کیا۔ معصوم اور بے گناہ بچے اور خواتین جاں بحق اور زخمی ہوئیں۔ بین الاقوامی برادری کو بھارتی اشتعال انگیزی کا نوٹس لینا چاہیے۔

قبل ازیں 24 ستمبر بروز جمعرات کو آئی ایس پی آر کی جانب سے مختلف 24 ممالک کے اتاشیوں اور سفیروں کو پاکستان اور بھارت کے مابین لائن آف کنٹرول کا دورہ کرایا گیا۔ اس موقع پر بین الاقوامی وفد کو آزاد کشمیر میں بھارتی حملوں سے ہونے والے نقصانات کے ثبوت بھی دکھائے گئے۔

ایل او سی کا دورہ کرنے والے غیر ملکی وفد میں 20 سے زائد ممالک کے سفراء، سینیر سفارت کار اور دفاعی اتاشی شامل ہیں۔

برطانیہ، فرانس، جرمنی، آذربائیجان، سعودی عرب، جنوبی افریقہ، ترکی، یونان، آسٹریلیا، ایران، عراق اور دیگر ممالک کے سفارت کاروں کے علاوہ عالمی ادارہ خوراک اور غیر ملکی میڈیا کے نمائندے بھی وفد کا حصہ ہیں۔

اپنے دورے کے دوران بین الاقوامی وفد ایل او سی پر بھارت کی جانب سے جنگ بندی کی خلاف ورزیوں کا جائزہ لیا۔ وفد کے اراکین نے بھارتی فائرنگ اور گولہ باری سے متاثرہ مقامی افراد سے ملاقات بھی کیں۔

اس موقع پر ڈی جی آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ پاکستان نے کبھی غیر ملکی سفیروں یا کسی ادارے کو ایل او سی پر جانے سے نہیں روکا، جب کہ دوسری جانب بھارت نےغیر ملکی سفیروں اور میڈیا کے مقبوضہ کشمیر اور ایل او سی کے دورے پر پابندی عائد کر رکھی ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube