Thursday, October 29, 2020  | 11 Rabiulawal, 1442
ہوم   > پاکستان

بلاول کا گلگت بلتستان میں شفاف الیکشن کا مطالبہ

SAMAA | - Posted: Sep 23, 2020 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Sep 23, 2020 | Last Updated: 1 month ago

بلاول بھٹو زرداری نے گلگت بلتستان میں شفاف الیکشن کا مطالبہ کردیا۔ کہتے ہیں کہ حکومت اور ان کے سہولت کاروں کیخلاف پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ الائنس بن چکا ہے، نیشنل سیکیورٹی میٹنگ میں وزیراعظم کو ہونا چاہئے تھا، اگر وزیراعظم کام نہیں کنا چاہتے تو استعفیٰ دیدیں، ہمارا مقصد اور مطالبہ پاکستان میں جمہوریت ہے، گلگت بلتستان جاکر پیپلزپارٹی کی انتخابی مہم خود چلاؤں گا، آرمی چیف بھی چاہتے ہیں کہ گلگت بلتستان کے الیکشن شفاف ہوں۔

چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے بلاول ہاؤس کراچی میں میڈیا بریفنگ کے دوران کہا کہ پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ الائنس حکومت اور سہولت کاروں کیخلاف بن چکا ہے، حکومت کے خلاف تاریخی اے پی سی ہوئی، جس میں نواز شریف کی شرکت اچھی شروعات تھی، ہمارا مقصد اور مطالبہ پاکستان میں جمہوریت ہے، قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس میں وزیراعظم کو ہونا چاہئے تھا، مگر وہ نہیں آئے، اگر عمران خان کام نہیں کرنا چاہتے تو استعفیٰ دے دیں۔

ان کا مزید کہنا ہے کہ نیشنل سیکیورٹی کے نام پر بلائی جانیوالی میٹنگ پر اعتراض نہیں کرتے، قومی سلامتی کیلئے مل بیٹھنا ہوگا، نيشنل سيکيورٹی کيلئے ہم ايک تھے اور ايک رہيں گے، غیرمتعلقہ لوگ نیشنل سیکیورٹی کے معاملے پر گفتگو سے گریز کریں، شیخ رشید احمد کا بیانیہ غیر ذمہ دارانہ ہے، وہ جس کا بھی ترجمان ہے وہ اسے چپ رہنے کا کہیں، اس طرح کی باتوں سے سيکيورٹی ايشوز اور خارجہ پاليسياں متنازع ہوں گی، ایسے ہی رہا تو آئندہ قومی سلامتی کی کسی بھی میٹنگ میں شیخ رشید کے ساتھ نہیں بیٹھیں گے۔

بلاول نے مزید کہا کہ کچھ لوگوں نے ميٹنگ ميں کچھ نہيں کہا وہ ٹی وی پر آکر بات کررہے ہيں، ہم اِن کيمرا بريفنگ کی بات باہر نہيں لاتے، میٹنگ میں گلگت بلتستان سے تعلق رکھنے والا کوئی رکن نہیں تھا، آرمی چیف کی طرف سے کسی خاص ترمیم پر کوئی بات نہیں ہوئی، وہ بھی چاہتے ہیں کہ گلگت بلتستان میں شفاف انتخابات ہوں۔

مزید جانیے : گلگت بلتستان میں عام انتخابات کیلئے حتمی تاریخ طے

پی پی چیئرمین کا کہنا ہے کہ گلگت بلتستان کے عوام اپنے مستقبل کے فیصلے خود کریں گے، وہ جو بھی فیصلہ کریں گے ہمیں قبول ہوگا، گلگت بلتستان میں اصلاحات پیپلزپارٹی کا منشور ہے، دیگر جماعتیں بھی اپنا منشور بنائیں، پیپلزپارٹی کی انتخابی مہم خود چلاؤں گا، گلگت بلتستان کے لوگ آزاد ہیں، وہ اپنی آزادی اور حقوق کا مطالبہ کرتے ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ قومی سلامتی کے معاملات پر دنیا کے سامنے ایک مؤقف لے کر جانا ہوگا، اس میں سب سے بڑی رکاوٹ عمران خان ہیں۔

پی پی چیئرمین کا کہنا تھا کہ میٹنگ کے دوران امین گنڈا پور مجھے گلگت بلتستان میں شفاف الیکشن کیلئے تسلی دے رہے تھے، ان کے ہاتھ میں کیا ہے کہ وہ شفاف الیکشن کرائیں؟، میں نے جنرل فیض حمید کی طرف اشارہ کرکے کہا ان کی طرف دیکھوں گا، اس کمرے میں بیٹھے لوگوں کیلئے یہ ایک اشارہ تھا، میرا اشارہ انہیں سمجھ آگیا، افسوس گنڈا پور نہ سمجھ سکے۔

چیئرمین پیپلزپارٹی کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس اور ٹڈی دل سے کسانوں کا معاشی قتل ہوا ہے، پیپلزپارٹی نے اپنے دور میں متاثرین کو وطن کارڈز دیئے، حکومت متاثرین کے نقصانات کا ازالہ کرے، کسانوں کی مدد کیلئے حکومت کو فوری ایکشن لینا ہوگا۔

بلاول بھٹو زرداری نے پریس کانفرنس گلگت بلتستان میں انتخابات کیلئے اپنے کچھ امیدواروں کا اعلان بھی کردیا۔ ان کا کہنا تھا کہ ابھی تمام نشستوں کیلئے امیدواروں کو حتمی شکل نہیں دی گئی۔

پیپلزپارٹی کے گلگت بلتستان کی قانون ساز اسمبلی کے انتخابات کیلئے امیدواروں کے نام۔

ایل اے ون گلگلت ون، امجد حسین

ایل اے ٹو گلگلت ٹو، جمیل احمد

ایل اے 3، آفتاب حیدر

ایل اے 6، ظہور کریم

ایل اے 7 اسکردو 1، سید مہدی شاہ

ایل اے 8 اسکردو 2، محمد علی شاہ

ایل اے 9 اسکردو 3، وزیر وقار

ایل اے 10 اسکردو 4، وزیر محمد خان

ایل اے 12 اسکردو 6، عمران ندیم

ایل اے 13 استور، عبدالحمید

ایل اے 15 دیامر ون، بشیر خان

ایل اے 16 دمامر 2، حاجی دلبر خان

ایل اے 17 دیامر 3، عبدالغفار خان

ایل اے 19 غذر ون، پیر جلال شاہ

ایل اے 21 غذر 3، محمد ایوب

ایل اے 22 گھانچے ون، محمد جعفر

ایل اے 23 گھانچے 2، غلام علی حیدر

ایل اے 24 گھانچے 3، انجینئر محمد اسماعیل

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube