Monday, September 28, 2020  | 9 Safar, 1442
ہوم   > پاکستان

ریپ کی سزا: اسلامی قانون کیا کہتا ہے

SAMAA | - Posted: Sep 14, 2020 | Last Updated: 2 weeks ago
Posted: Sep 14, 2020 | Last Updated: 2 weeks ago

اسلام نے عبرت ناک سزا کا حکم دیا ہے

مفتی تقی عثمانی نے ریپ کے واقعات کو ’فساد فی الارض‘ کے زمرے میں شمار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایسی صورت میں ’عبرت ناک سزا‘ دینے کیلئے قانون سازی کی ضرورت ہے۔

لاہور میں موٹروے پر خاتون کے ساتھ بچوں کے سامنے اجتماعی زیادتی کے بعد ملک میں ایک بار پھر ریپ کیلئے سزا کے تعین پر بحث جاری ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے 92 نیوز چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ریپ کے مجرموں کو ’نامرد‘ بنانا چاہیے۔

سماء ٹی وی کے پروگرام میں میزبان ندیم ملک نے اسلامی شریعت کا نکتہ نظر جاننے کیلئے دارالعلوم کراچی کے مہتمم مفتی تقی عثمانی سے رائے مانگی۔ انہوں نے قرآن مجید کی سورۃ نور کی آیت کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ریپ کے واقعات فساد فی الارض یعنی زمین پر فساد برپا کرنے کے مترادف ہے۔

مفتی تقی عثمانی نے کہا کہ ایسی صورت میں حاکم کو اختیار حاصل ہے کہ وہ سزا کا تعین کرے مگر سزا ایسی ہو کہ دیکھ کر لوگوں کے ’رونگھٹے کھڑے‘ ہوجائیں اور لوگوں کے سامنے دی جانی چاہیے تاکہ عوام پر اس کا اثر پڑے۔

مفتی تقی عثمانی نے مگر حاکم کے صوابدید پر پر شرط رکھ دی کہ ’جب قانون موجود نہ ہو تو حاکم کو اختیار حاصل ہے۔ پچھلے زمانے میں حاکم خود سزا دیتا تھا۔ لیکن ہمارے ہاں قانون موجود ہے تو قانون سازی کے اندر گنجائش ہونی چاہیے تاکہ حاکم کو اختیار حاصل ہوجائے تاکہ وہ عبرت ناک سزا کا تعین کرسکے۔‘

ڈین این اے بطور شہادت قبول کیا جاسکتا ہے

مذہبی حلقے میں یہ بات زیر بحث رہتی ہے کہ کیا ڈی این اے ٹیسٹ بطور شہادت یا ثبوت کے طور پر قبول کی جاسکتی ہے یا نہیں مگر مفتی تقی عثمانی نے آج کی گفتگو میں واضح طور پر کہا کہ اس کو بطور شہادت قبول کیا جاسکتا ہے۔

میزبان ندیم ملک نے ان سے سوال کیا کہ ڈین این اے ٹیسٹ یا کسی بھی شفاف طریقے سے جرم ثابت ہوجائے تو کیا حاکم سزا کا تعین کرسکتا ہے۔ اس کے جواب میں مفتی تقی عثمانی نے کہا کہ ’ 100 فیصد سزائے موت دی جاسکتی ہے اور موت کیلئے بھی عبرتناک طریقہ اختیار کرنا چاہیے۔ حاکم یہ بھی اختیار ہے۔

انہوں نے کہا کہ جب تک ایسی ہیبت ناک سزا نہ دی جائے کہ لوگوں کے رونگھٹے کھڑے اس وقت تک جرائم جاری رہیں گے۔ جیلیں بھرنے سے کوئی فائدہ نہیں۔ قید میں مجرم مزید جرائم پیشہ بن جاتا ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube