Thursday, December 3, 2020  | 16 Rabiulakhir, 1442
ہوم   > پاکستان

علامہ ضمیر اختر نقوی انتقال کرگئے

SAMAA | - Posted: Sep 13, 2020 | Last Updated: 3 months ago
SAMAA |
Posted: Sep 13, 2020 | Last Updated: 3 months ago

فائل فوٹو

پاکستان کے نامور مذہبی عالم اور خطیب علامہ سید ضمیر اختر نقوی کراچی میں انتقال کرگئے۔

اہل خانہ کے مطابق علامہ ضمیر اختر نقوی کا انتقال دل کا دورہ پڑنے سے ہوا۔ علامہ صاحب کو رات گئے اسپتال منتقل کیا گیا تھا، تاہم وہ جانبر نہ ہوسکے۔

اہل خانہ کا مزید کہنا ہے کہ مرحوم کی میت انچولی امام بارگاہ منتقل کی جائے گی۔ ان کی نماز جنازہ بعد نماز مغرب ادا کی جائے گی۔ علامہ ضمیر اختر کی تدفین وادی حسین قبرستان میں ہوگی ۔

علامہ ضمیر اختر کو جدید ترین علوم و فنون پر دسترس حاصل تھی۔ ضمیر اختر نقوی نے کئی کتابیں بھی لکھیں۔ وہ زباں داں اور ادیب بھی تھے۔ علامہ ضمیر اختر نقوی بھارتی شہر لکھنؤ میں پیدا ہوئے۔ انہوں نے حسین آباد اسکول سے میٹرک اور گورنمنٹ جوبلی کالج سے انٹرمیڈیٹ مکمل کرنے کے بعد گریجویشن کی سند شیعہ کالج لکھنؤ سے حاصل کی۔

ضمیر اختر نقوی نے 1967ء میں نقل مکانی کرکے پاکستان کے شہر کراچی شہر میں سکونت اختیار کی ۔ شاعری اور اردو ادب سمیت مختلف موضوعات علامہ ضمیر اختر نقوی کا خاصہ رہے۔ وہ خطیب کے ساتھ ساتھ شاعر بھی تھے، انہوں نے شاعری، مرثیہ نگاری سمیت درجنوں کتابیں لکھیں۔

فائل فوٹو

علامہ ضمیر اختر نقوی نے شہزاد قاسم ابن حسن پر 2 جلدوں پر مشتمل سوانح تحریر کی، ان کی تصنیف معراجِ خطابت 5 جلدوں پر مشتمل ہے۔

علامہ سید ضمیر اختر نقوی کے انتقال پر گورنر سندھ عمران اسماعیل کی جانب سے بھی افسوس کا ظہار کیا گیا ہے۔

اپنے بیان میں گورنر سندھ عمران اسماعیل کا کہنا تھا کہ اللّٰہ تعالیٰ سے دعا ہے کہ وہ مرحوم کے لواحقین کو صبرِ جمیل عطا فرمائیں۔ اس موقع پر انہوں نے مرحوم علامہ ضمیر اختر نقوی کی مغفرت اور درجات کی بلندی کے لیے دعا بھی کی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube