Saturday, October 16, 2021  | 9 Rabiulawal, 1443

سندھ کےاسکولوں ميں اس سال سرديوں کی چھٹياں ختم

SAMAA | - Posted: Sep 11, 2020 | Last Updated: 1 year ago
SAMAA |
Posted: Sep 11, 2020 | Last Updated: 1 year ago

جو اسکول ایس او پیز فالو نہیں کریں گے وہ بند کرديئےجائیں گے

سندھ حکومت نے صوبے کے اسکولوں ميں اس سال موسم سرما کی چھٹیاں نہ دینے کا فیصلہ کرتے ہوئے متنبہ کیا ہے کہ کرونا وائرس کی وبا سے بچاؤ کی تداییر پر عمل پیرا نہ ہونے والے اسکول بند کردیے جائیں گے۔

وزيرتعليم سندھ سعيد غنی نے جمعے کو صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سندھ میں اس سال سردی کی چھٹیاں ختم کردی گئی ہیں اور جو اسکول اسٹینڈرڈ آپریٹنگ پروسیجرز (ایس او پیز) فالو نہیں کریں گے انہیں بند کردیا جائے گا۔

سعيد غنی نے کہا کہ پورے پاکستان میں 15 ستمبر سے تعلیمی اداروں کو مرحلہ وار کھولنے کا فیصلہ کیا گیا ہے اور یہ بہت مشکل فیصلہ ہے۔

صوبائی وزیرتعلیم نے کرونا وائرس کے حوالے سے کہا کہ اب صورتحال بہتر ہے لیکن کرونا کم ہوا ہے ختم نہیں ہوا اس وجہ سے بہت زیادہ احتیاط کی ضرورت ہے۔

انھوں نے تسلیم کیا کہ 15 ستمبر کوحالات بہت زیادہ تبدیل ہوں گے کیوں کہ چھوٹے بچوں سے ایس او پیز فالو کروانا زیادہ مشکل ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اسکول کھولنا بازار کھولنے سے بھی مشکل کام ہے اور بچوں کو اسکول بھیجتے وقت بہت زیادہ احتیاطی تدابیر اختیار کرنی ہوں گی اور اس سلسلے میں صوبائی حکومت میڈیا کے ذریعے آگاہی مہم چلائے گی۔

انھوں نے کہا کہ کچھ والدین اب بھی بچوں کواسکول بھیجنے کو تیارنہیں لہٰذا جوبچے اسکول نہیں جانا چاہتے انہیں آن لائن تعلیم دی جائے گی۔

سعید غنی نےمزید کہا کہ بچوں کے لیے خود بھی گھر پر کپڑے کا ماسک بنایا جاسکتا ہے اور کسی کو مخصوص ماسک کے لیے پابند نہیں کیا جائے گا۔

فیس سےمتعلق وزیرتعلیم کا کہنا تھا کہ 5 فیصد اضافے کو اس وقت روکنا ممکن نہیں کیوں کہ کرونا وائرس کی وبا پھیلنے کے بعد اسکول بند ہوگئے تھے۔ انہوں نے واضح کیا کہ محکمہ تعلیم میں اساتذہ کی کمی کا کرونا وائرس سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

یکساں نظام تعلیم اور نصاب سے متعلق انھوں نے بتایا کہ وفاقی وزیرتعلیم شفقت محمود سے ملاقات ہوئی تھی،18ویں ترمیم کے بعد تعلیم صوبائی معاملہ ہےاوروفاقی حکومت کےپاس اختیار نہیں ہے کہ وہ نصاب تیار کرکےصوبوں پرلاگوکردے۔انھوں نے اس حوالےسےیہ بھی بتایا کہ اگروفاقی حکومت نےنصاب پر کوئی کام کیا ہےتوسندھ حکومت نےکہاہےکہ اس کی تفصیلات سےآگاہ کیاجائے،جوبہترنصاب ہےاس کو اپنانے کے لیے تیار ہیں۔

سعیدغنی نے کہا کہ بنیادی نصاب تعلیم پورے ملک میں ایک ہے،وفاقی حکومت ہم پر یکساں تعلیمی نصاب نہ زبردستی لاگو کرنا چاہتی ہے اور نہ ایسا ہوگا،جو بہتر نصاب ہوگا اسے اپنایا جائے گا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube