Thursday, October 22, 2020  | 4 Rabiulawal, 1442
ہوم   > پاکستان

عاصم سلیم باجوہ کا استعفیٰ منظورنہیں ہوا

SAMAA | - Posted: Sep 4, 2020 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Sep 4, 2020 | Last Updated: 2 months ago

Bajwa and Imran

معاون خصوصی لیفٹنٹ جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ نے وزیر اعظم عمران خان کو آج اپنا استعفیٰ پیش کیا جسے وزیر اعظم نے قبول نہ کرنے کا فیصلہ کیا۔

وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ لیفٹنٹ جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ کی جانب سے جو ثبوت اور وضاحت پیش کی گئی ہے وہ اس سے مطمئن ہیں لہٰذا وزیر اعظم نے انہیں بطور معاون خصوصی کام جاری رکھنے کی ہدایت کی ہے۔

عاصم باجوہ کا ایک عہدہ چھوڑنے کا فیصلہ

جمعرات 3 ستمبر کو عاصم سلیم باجوہ نے وزیراعظم کے معاون خصوصی کے عہدے سے استعفیٰ جبکہ سی پیک اتھارٹی کے سربراہ کی کرسی پر بدستور بیٹھنے کا فیصلہ کیا تھا۔

واضح رہے کہ عاصم سلیم باجوہ کو حکومت نے دو عہدوں پر تعینات کر رکھا ہے۔ وہ اطلاعات و نشریات کیلئے وزیراعظم کے معاون خصوصی ہونے کے ساتھ سی پیک اتھارٹی کے چیئرمین بھی ہیں۔

عاصم باجوہ سے متعلق احمد نورانی کی رپورٹ

حکومت کی اہم سمجھی جانے والی شخصیت اس وقت تنازع کا شکار ہیں۔ تحقیقاتی رپورٹر احمد نورانی نے اپنی حالیہ اسٹوری میں انکشاف کیا ہے کہ عاصم باجوہ، ان کے بیٹے اور بیگم کے نام پر پاکستان سمیت دیگر کئی ممالک میں کاروبار اور جائیدادیں ہیں جو انہوں نے اپنے اثاثہ جات کے گوشواروں میں ظاہر نہیں کیے۔

احمد نورانی کی اسٹوری فیکٹ فوکس ویب سائٹ پر شائع ہوئی جس کے مطابق عاصم باجوہ کے بھائی ندیم باجوہ نے امریکا کی معروف فوڈ چین پاپا جونز کا پہلا ریسٹورنٹ 2002 میں قائم کیا۔ اسی سال جنرل (ر) عاصم باجوہ کی جنرل پرویز مشرف کے اسٹاف آفیسر کے طور پر تعیناتی ہوئی تھی۔

ندیم باجوہ نے اپنے کاروباری سفر کا آغاز پاپا جونز پیزا ریسٹورنٹ میں بطور ڈیلیوری ڈرائیور کیا تھا، یہ کاروبار عاصم سلیم باجوہ کی ترقی کے ساتھ ساتھ پھیلتا چلا گیا۔ اب ان کے بھائیوں اور عاصم باجوہ کی اہلیہ اور بچوں کی چار ممالک میں 99 کمپنیاں اور 130 فعال فرینچائز ریسٹورنٹس ہیں جن کی موجودہ مالی حثیت تقریبا چالیس ملین ڈالر (6 ارب 70کروڑ پاکستانی روپے) ہے۔

رپورٹ کے مطابق جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ  کی اہلیہ اور ان کے بیٹوں نے پاکستان اور امریکا میں ان کاروباروں میں شمولیت اختیار کی۔ ان کی اہلیہ امریکا، کینیڈا اور متحدہ عرب امارات میں چلنے والے کاروباروں میں برابر کی شراکت دار ہیں۔

لیکن عاصم سلیم باجوہ نے وزیراعظم کے معاون خصوصی بننے کے بعد جمع کروائی گئی اپنے اثاثہ جات کی فہرست میں اپنی بیوی کے پاکستان سے باہر بزنس کیپیٹل کا ذکر نہیں کیا۔ بلکہ متعلقہ کالم میں باقائدہ کوئی نہیں ہے لکھا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube