Monday, December 6, 2021  | 30 Rabiulakhir, 1443

گستاخانہ خاکوں کی اشاعت اظہار رائے کی آزادی نہیں،پاکستان

SAMAA | - Posted: Sep 2, 2020 | Last Updated: 1 year ago
Posted: Sep 2, 2020 | Last Updated: 1 year ago

فائل فوٹو

پاکستان کی جانب سے فرانسیسی میگزین میں گستاخانہ خاکوں کی اشاعت پر شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ میگزین میں گستاخانہ خاکوں کی دوبارہ اشاعت کے فیصلے سے کروڑوں مسلمانوں کے جذبات مجروح ہونگے۔

ترجمان دفتر خارجہ زاہد حفيظ چوہدری نے فرانسیسی میگزین چارلی ہیبڈو کی جانب سے پھر پيغمبر ِاسلام کی شان میں گستاخی کرنے پر اسے صحافتی دہشت گردی قرار دیا گیا ہے۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ فرانسیسی میگزین کے اداریے میں لکھے گئے کالم اور شائع ہونے والے خاکوں سے مسلمانوں کے جذبات مجروح ہوئے ہیں۔ ايسے اقدامات سے عالمی سطح پر مذہبی ہم آہنگی اور امن کو ٹھيس پہنچتی ہے۔ جان بوجھ کر کروڑوں مسلمانوں کے جذبات کو ٹھیس پہنچانے کے عمل کو آزادی اظہار رائے قرار نہیں دیا جا سکتا۔

کشمير کميٹي کے چيئرمين شہريار آفريدی کا کہنا ہے کہ اس سے مسلمانوں کے خلاف سازش کی بو آرہی ہے۔ رابطہ عالم اسلامی کے سيکريٹری جنرل اور علما کونسل کے چيئرمين الشيخ ڈاکٹر محمد العيسی نے فرانسيسی جريدہ کی مجرمانہ حرکت کو اشتعال انگيز اور ناقابل ِ قبول قرار ديا ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube