Monday, January 24, 2022  | 20 Jamadilakhir, 1443

کیا آپ نےکراچی کا’چھانگا مانگا‘دیکھا ہے؟

SAMAA | - Posted: Aug 31, 2020 | Last Updated: 1 year ago
Posted: Aug 31, 2020 | Last Updated: 1 year ago

آپ پنجاب کے ضلع قصور کے مصنوعی جنگل چھانگا مانگا سے تو واقف ہونگے ہی لیکن کیا آپ نے کراچی میں واقع کسی ایسے جنگل کے بارے میں سنا ہے جسے چھانگا مانگا سے تشبیہ دی جاسکے۔ اگر نہیں تو آئیے ہم آپ کو بتاتے ہیں۔

ہم جس جگہ کی بات کر رہے ہیں وہ ضلع ملیر کے علاقے گڈاپ میں واقع تھدو ڈیم کے اطراف میں ہے. اس چھوٹے جنگل کے منصوبے پر کام کی ابتداء سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ کراچی نے سن 2004 میں اس وقت کے سٹی ناظم نعمت اللہ خان مرحوم کے حکم پر کی تھی۔

یہاں گزشتہ چند برسوں میں ہزاروں درخت لگائے ہیں جس نے اسے ایک گھنے جنگل کا روپ دے دیا ہے۔ اس جنگل کو لوگ کراچی کا چھانگا مانگا کہتے ہیں جو خاصی تک بجا بھی ہے۔

تھدو ڈیم گڈاپ کی طرف سے آنے والی تھدو ندی پر بنایا گیا ہے جو ملیر ندی میں شامل ہونے والی چار برساتی ندیوں میں سے ایک ہے۔ دیگر تین برساتی ندیاں سکھن ندی، کھادیجی ندی اور کونکر ندی کہلاتی ہیں۔

تھدو ڈیم سے نہریں نہیں نکالی گئی ہیں بلکہ یہاں کا پانی ٹیوب ویل اور کنوؤں کے ذریعے گڈاپ کے علاقے میں باغبانی و کھیتی باڑی کیلئے استعمال ہوتا ہے۔

ڈیم میں روکے جانے والے پانی کی وجہ سے اطراف کی زمینوں میں زیر زمین پانی کی سطح ایک لمبے وقت تک بہتر رہتی ہے جس کے باعث زراعت کیلئے استعمال ہونے والے کنویں سیراب رہتے ہیں۔

ڈیم کے گرد و نواح میں متعلقہ محکمے نے شہتوت، چیکو، شریفہ، نیم، امرود اور دیگر کئی اقسام کے درخت لگائے ہیں۔ یہ جنگل شہد اور ریشم کی پیداوار کیلئے بھی انتہائی موزوں ہے۔

کراچی کا یہ چھانگا مانگا عوام کیلئے ایک شاندار سیرگاہ کی حیثیت رکھتا ہے۔

تصاویر : عبیداللہ کیہر

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube