Monday, January 17, 2022  | 13 Jamadilakhir, 1443

عثمان بزدارنےمحمودخان کوہیلی کاپٹرکے سفرمیں پیچھےچھوڑدیا

SAMAA | - Posted: Aug 18, 2020 | Last Updated: 1 year ago
Posted: Aug 18, 2020 | Last Updated: 1 year ago

وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدارکےہیلی کاپٹرسےسفرکاخرچہ وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان کےسفرسے273 فیصد زیادہ ہے۔ یہ حقائق جون 2019سے نومبرتک کےاعدادوشمار میں سامنے آئے ہیں۔

یہ اعدادوشمار رپورٹر کی جانب سے رائٹ ٹوانفارمیشن ریکوئسٹ کےتحت خیبرپختونخوا کے ایڈمنسٹریشن ڈپارٹمنٹ اوروزیراعلیٰ پنجاب کے دفتر کی جانب سے جاری کئے گئے۔

وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے جون 2019 سے نومبر 2019 کے درمیان 77 بار ہیلی کاپٹر کے ذریعے سفر کیا۔ اس سفر پر قومی خزانےپر14 لاکھ 40 ہزار روپے کا بوجھ پڑا۔ اس دوران وزیراعلیٰ نے 72 گھنٹے اور 50 منٹ ہیلی کاپٹر کا استعمال کیا جس پر تقریبا 19 ہزار264 روپے فی گھنٹے کا خرچہ آیا۔

سرکاری دستاویز کےمطابق وزیراعلیٰ کے ہمراہ سفر میں 192 افراد شریک ہوئے جن میں پارٹی رہنماء ، کارکنان اور سرکاری ملازم شامل ہیں۔ اس کا مطلب یہ ہوا کہ فی مسافر 7314 روپے کا خرچہ آیا۔

وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے 6 ماہ کے دوران 68 بار ہیلی کاپٹر کے ذریعے سفر کیا جن پر 37 لاکھ 30 ہزار روپے کاخرچ آیا۔ وزیراعلیٰ پنجاب کے ہیلی کاپٹر سے سفر کا مجموعی وقت 51 گھنٹے اور 55 منٹ رہا۔ اس پر 72ہزار روپے فی گھنٹے کا خرچ آیا۔ یہ رقم وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کے ہیلی کاپٹر کے سفر پر آنے والے پیٹرول کے اخراجات سے 273 فیصد زیادہ ہے۔

سرکاری دستاویز کے مطابق وزیراعلیٰ عثمان بزدار کے ہمراہ سفر میں 235 افراد شریک ہوئے اور فی مسافر15ہزار906 روپے کا خرچ آیا جووزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کے ہیلی کاپٹر سفر کے فی مسافر 7314 روپے سے تقریبا دگنا ہے۔

مزید یہ کہ وزیراعلیٰ محمود خان نے 6 ماہ کے دوران اسلام آباد کا 14 بار ہیلی کاپٹر کے ذریعے سفر کیا۔ وہ 5 بار سوات گئے اور 3 بار بشام کا سفر کیا۔ جون 2019 میں انھوں نے 10 بار ہیلی کاپٹر کا استعمال کیا۔جولائی 2019 میں صرف 2 بار انھوں نے ہیلی کاپٹر پر سفر کیا۔ اگست 2019 میں وہ 24 بار ہیلی کاپٹر میں سوار ہوئے جبکہ ستمبر میں 34، اکتوبر میں 29 اور نومبر میں 14 بار انھوں نے سفر کےلیے ہیلی کاپٹر استعمال کیا۔

وزیراعلیٰ پنجاب کے برخلاف،خیبرپختونخوا کے وزیراعلیٰ محمود خان نے ہیلی کاپٹر کو گورنر ہاؤس جانے یا فضائی جائزہ کے لیے کبھی استعمال نہیں کیا۔

اس معلومات کےحصول کا طریقہ:۔

ان اعدادوشمار کے لیے رائٹ ٹو انفارمیشن ریکوئسٹ کے تحت نومبر 2019 میں درخواست مجوزہ محکموں میں دائر کی گئی تھی۔

ابتدائی طور پر وزیراعلیٰ پنجاب کے دفتر نے یہ معلومات دینے سے انکار کردیا تھا۔ ان کا موقف تھا کہ ایسی معلومات فراہم کرنا پنجاب ٹرانسپرنسی اینڈ رائٹ ٹو انفارمیشن ایکٹ 2013 کے سیکشن 13 کے دائرہ کار میں نہیں آتا۔ تاہم رپورٹر کی جانب سے پنجاب انفارمیشن کمیشن میں شکایت درج کروانے پر وزیراعلیٰ کے دفتر کی جانب سے یہ معلومات جاری کی گئیں۔

اس کےعلاوہ، خیبرپختونخوا کے ایڈمنسٹریشن ڈپارٹمنٹ کی جانب سےرائٹ ٹوانفارمیشن ریکوئسٹ کاجواب دینےکےلیے8 ماہ لگائے گئے جبکہ ان پر لازم تھاکہ وہ 14 روز میں کسی بھی درخواست کا جواب دیں۔

ایسی ہی معلومات تک رسائی کے لیے وزیراعلیٰ سندھ کے سیکریٹیریٹ کو بھی درخواست دی گئی لیکن وزیراعلیٰ سندھ کے سیکریٹیریٹ نہ ہی سندھ انفارمیشن کمیشن نے رپورٹر کی درخواست پر کوئی جواب دیا۔

شہزاد یوسف زئی اسلام آباد کے فری لانس صحافی ہیں۔ ان کا ٹویٹر ہینڈل
  @TheShehzad
ہے اور ان سے
shehzadyz@gmail.com 
پر رابطہ کیا جاسکتا ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
Usman BUZDAR ,Mahmood Khan,Usman BUZDAR helicopter trip,Usman BUZDAR helicopter trip cost ,Chief Minister of Khyber Pakhtunkhwa Mahmood Khan,CM punjab Usman BUZDAR
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube