Saturday, September 26, 2020  | 7 Safar, 1442
ہوم   > پاکستان

سپریم کورٹ کاکراچی سرکلرریلوے کی بحالی میں رکاوٹیں ختم کرنیکاحکم

SAMAA | - Posted: Aug 13, 2020 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Aug 13, 2020 | Last Updated: 1 month ago

سپریم کورٹ نے کراچی سرکلر ریلوے کی بحالی میں تمام رکاوٹیں فوری طور ختم کرنے کا حکم دے ديا، ایف ڈبلیو او کو 10 انڈر پاسز کی ذمہ داری دے دی گئی، کڈنی ہلز اور ہل پارک کی زمين سے قبضہ فوری ختم کرانے کا حکم بھی جاری کرديا۔

کراچی سپريم کورٹ رجسٹری ميں اہم مقدمات کی سماعت کا تحریری حکم نامہ جاری کردیا۔ عدالت عظمیٰ کا کہنا ہے کہ کے سی آر روٹ پر سے تجاوزات کا خاتمہ کيا جائے، تمام رکاوٹيں فوری طور پر ختم کی جائيں۔

سپریم کورٹ نے ایف ڈبلیو او کو کراچی سرکلر ریلوے کيلئے 10 انڈر پاسز بنانے کی ذمہ داری بھی دے دی۔ سيکريٹری ٹرانسپورٹ کے مطابق انڈر پاسز کی تعمیر کیلئے 5 ارب روپے مختص کئے گئے ہيں جبکہ منصوبے کیلئے 3 ارب روپے پہلے جاری کئے جاچکے ہیں۔

عدالت نے پاکستان ريلوے کو سندھ حکومت کے اشتراک سے دیگر کام جاری رکھنے کا بھی حکم دے دیا۔

عدالت نے کڈنی ہلز کی زمین پر قائم اسکول اور ہل پارک کی زمین پر تعمیر گھروں کو فوری گرانے کا حکم ديا جبکہ کمشنر کراچی کو باغ ابن قاسم سے مسمار شدہ عمارت کا ملبہ اٹھانے اور سول ایوی ایشن اتھارٹی کو غیر استعمال شدہ زمینوں پر سبزا اگانے کے احکامات دیئے گئے۔

سپریم کورٹ نے کمشنر کو شاہراہ قائدین پر گرین بیلٹ کی تزین و آرائش کا حکم ديتے ہوئے کہا کہ شو رومز اور دکانداروں کو فٹ پاتھ یا گرین بیلٹ پر قبضہ نہ کرنے دیا جائے۔

اين ڈي ايم اے کے ذريعے نالوں کی صفائی پر حکومت سندھ کی نظرثانی کی درخواست پر بھی سماعت ہوئی۔

عدالت نے واضح کرديا کہ اين ڈی ايم اے جاپان کا نہيں پاکستان کا ہی ادارہ ہے۔ ايڈووکيٹ جنرل سندھ نے کہا کہ این ڈی ایم اے سے نالے صاف کرانے کا مقصد تو يہ ہوا کہ حکومت سندھ مکمل آؤٹ ہوگئی، 30 اگست تک مہلت ديں، وزيراعلیٰ نے يقين دلايا ہے کہ مقررہ مدت تک تمام نالے صاف کردیئے جائیں گے۔

چيف جسٹس نے ريمارکس دیئے کہ تو اب آپ کو فکر ہورہی ہے، آپ چاہتے ہیں کہ این ڈی ایم اے کو روک دیا جائے، اصل مسئلہ یہ ہے کہ ورلڈ بینک کی فنڈنگ خطرے میں پڑگئی ہے، ان کو تو فنڈ ہضم کرنا ہے، بتائیں پہلے کونسا فنڈ صحیح استعمال ہوا ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube